پاکستان: تجارت کے ليے ڈالر کی جگہ يوآن کے استعمال پر غور | حالات حاضرہ | DW | 19.12.2017
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پاکستان: تجارت کے ليے ڈالر کی جگہ يوآن کے استعمال پر غور

پاکستان چین کے ساتھ تجارت کے لیے امریکی ڈالر کے بجائے ممکنہ طور پر چینی یوآن استعمال کرنے کی تجویز پر غور کر رہا ہے۔

اسلام آباد حکومت پاکستان اور چين کے مابين باہمی تجارت کے ليے ڈالر کے متبادل کے طور پر چينی کرنسی يوآن استعمال کرنے پر غور کر رہی ہے۔ اس بارے ميں رپورٹ پاکستان کے انگریزی اخبار ڈان نے آج بروز منگل شائع کی ہے۔ رپورٹ کے مطابق پاکستانی وزیر داخلہ احسن اقبال کے حوالے سے کہا جا رہا ہے کہ وہ اس بارے ميں ايک تجویز پر اس وقت گفتگو کرتے سنے گئے تھے، جب انہوں نے پاکستان اور چین کے درمیان ایک طویل المدتی ترقیاتی منصوبے کا حال ہی ميں اعلان کیا تھا۔

نیوز ایجنسی روئٹرز کی رپورٹ کے مطابق اس طویل المدتی منصوبے کے تحت دونوں ممالک کے درمیان ریلوے لائنوں کا نیٹ ورک قائم کیا جائے گا، انفارمیشن نیٹ ورک کا انفراسٹرکچر بنایا جائے گا، توانائی اور تجارتی پارکس بنائے جائیں گے۔ اس کے علاوہ زراعت، سیاحت اور غربت کے خاتمے کے لیے بھی کام کیا جائے گا۔

روئٹرز کی رپورٹ کے مطابق پاکستان اور چین سن 2030 تک مل کر پاک چین اقتصادی راہ داری منصوبے پر کام کریں گے۔ چین اب تک اس منصوبے کے تحت پاکستان میں 57 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کا اعلان کر چکا ہے۔

ویڈیو دیکھیے 03:52
Now live
03:52 منٹ

ملازمتوں کی امید، پاکستانی چینی زبان سیکھنے لگے

Audios and videos on the topic