بھارتی آبدوز کو ساحلی حدود سے باہر دھکیل دیا: پاک بحریہ | حالات حاضرہ | DW | 18.11.2016
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

بھارتی آبدوز کو ساحلی حدود سے باہر دھکیل دیا: پاک بحریہ

پاکستانی بحریہ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ایک بھارتی آبدوز کو پاکستان کی ساحلی حدود میں داخل ہونے سے روک دیا گیا ہے۔ پاک بحریہ کا کہنا ہے کہ بھارتی آبدوز کو پاکستان کے جنوبی ساحل کی طرف دیکھا گیا تھا۔

Indien Navy U-Boot (Vietnam News Agency/AFP/Getty Images)

بھارتی نیوی کے ترجمان کا کہنا ہے کہ  پاکستانی بحریہ کا یہ بیان صریحاﹰ جھوٹ پر مبنی ہے

پاکستان کی بحریہ کی طرف سے یہ بیان ایک ایسے وقت میں آیا ہے، جب جوہری ہتھیاروں سے مسلح دونوں حریف ممالک کے درمیان گزشتہ چند ماہ سے کشیدگی میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے۔

پاکستان نیوی کے مطابق بھارتی آبدوز کا پتہ چلنے کے بعد اسے پاکستان کے پانیوں  میں داخل ہونے سے روک دیا گیا تھا۔ بیان میں مزید تفصیلات فراہم نہیں کی گئیں ہیں اور آزادانہ ذرائع سے بھی  اِس کی تصدیق نہیں ہو سکی ہے۔ پاکستانی بحریہ کا کہنا ہے کہ بھارتی آبدوز کو نومبر کی چودہ تاریخ کو پاکستان کے جنوبی ساحل کی طرف دیکھا گیا۔ پاکستانی نیوی نے بھارتی آبدوز کی فوٹیج اور تصاویر بھی شائع کی ہیں۔  دوسری جانب بھارتی نیوی کے ترجمان ڈی کے شرما کا خبر رساں ادارے روئٹرز سے بات کرتے ہوئے کہنا ہے کہ  پاکستانی بحریہ کا یہ بیان صریحاﹰ جھوٹ پر مبنی ہے۔

 یاد رہے کہ بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر میں اُڑی کی فوجی چھاؤنی پر رواں برس ستمبر میں حملے کے بعد سے دونوں ممالک میں تناؤ دن بدن بڑھ رہا ہے۔ اٹھارہ ستمبر کو لائن آف کنٹرول کے قریب اڑی سیکٹر میں مشتبہ عسکریت پسندوں کی جانب سے بھارت کے فوجی اہلکاروں پر ایک حملے میں 19 بھارتی اہلکار ہلاک ہو گئے تھے۔

بھارت نے الزام عائد کیا تھا کہ حملہ آور پاکستان سے سرحد پار کر کے بھارت میں داخل ہوئے تھے تاہم پاکستان نے ان الزامات کو مسترد کر دیا تھا۔ اس واقعے کے بعد سے دونوں ممالک کے درمیان لائن آف کنٹرول پر بھی کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔

DW.COM

اشتہار