کتے کو ٹوپی کیوں پہنائی گئی؟ | معاشرہ | DW | 29.12.2017
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

کتے کو ٹوپی کیوں پہنائی گئی؟

کرغزستان میں پارلیمان کے اراکین نے ایک ایسے شخص کے خلاف کارروائی کرنے پر زور دیا ہے جس نے کتوں کے ایک شو کے دوران اپنے کتے کو  وسطی ایشائی ملک کی روایتی ٹوپی پہنائی تھی۔

کرغزستان کی پولیس کا بھی کہنا ہے کہ انہوں نے اس حوالے سے تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے کہ ملک کے دارالحکومت بشکیک میں اس ڈاگ شو کا انعقاد کس نے کرایا تھا۔  کرغزستان کی سوشل ڈیموکریٹک پارٹی کے رکن صوبائی اسمبلی ریسکیلڈی مومبیکوو نے پارلیمانی اجلاس کے دوران کہا، ’’ ہم نے اپنی قومی  علامت ایک کتے کو پہنا دی۔ انہوں نے ایک کتے کو کرغز بنا دیا اور ایک کرغز کو کتا۔‘‘

مومبیکوو نے کہا کہ کل ایک خنزیر کو بھی ہماری روایتی ٹوپی ’کلپک‘ پہنا دی جائے گی اور بلی کے فضلے کے لیے قومی جھنڈا استعمال کیا جائے گا۔ عوام میں مقبول کئی شخصیات نے بھی کتے کے مالک اور اس ڈاگ شو کے منتظمین کے خلاف کارروائی کرنے کے لیے ایک پٹیشن پر دتسخط کیے ہیں۔

Crufts Hundeshow Birmingham 2013 (Reuters)

پولیس کا کہنا ہے کہ انہوں نے اس حوالے سے تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے کہ اس ڈاگ شو کا انعقاد کس نے کرایا تھا

2010 میں شدید عوامی مظاہروں کے بعد سے کرغستان کے سیاست دان قومی سلامتی اور ثقافت کے موضوعات پر بہت زیادہ توجہ دینا شروع ہو گئے ہیں۔ 2011 میں سیاست دانوں نے پارلیمنٹ میں ایک بکرے کو ذبح کیا تھا تاکہ نظر بد سے بچا جا سکے۔

  • تاریخ 29.12.2017
  • مصنف null بینش جاوید / نیوز ایجنسیاں
  • ایک یا ایک سے زیادہ کلیدی الفاظ درج کریں کتے
  • Feedback: فیڈ بیک
  • پرنٹ کریں یہ صفحہ پرنٹ کریں
  • پیرما لنک https://p.dw.com/p/2q7Kg
  • تاریخ 29.12.2017
  • مصنف null بینش جاوید / نیوز ایجنسیاں
  • ایک یا ایک سے زیادہ کلیدی الفاظ درج کریں کتے
  • فیڈ بیک
  • پرنٹ کریں یہ صفحہ پرنٹ کریں
  • پیرما لنک https://p.dw.com/p/2q7Kg