کابل میں خودکش حملہ، کم از کم 24 ہلاک | حالات حاضرہ | DW | 17.09.2019
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

حالات حاضرہ

کابل میں خودکش حملہ، کم از کم 24 ہلاک

افغان دارالحکومت کابل کے مرکزی حصے میں ہونے والے ایک خودکش بم دھماکے کے نتیجے میں کم از کم 24 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ یہ دھماکا افغان صدر اشرف غنی کی انتخابی ریلی کے قریب ہوا ہے۔

افغانستان میں صدارتی انتخابات میں دو ہفتوں سے بھی کم وقت باقی رہ گیا ہے اور ان دنوں انتخابی مہم زوروں پر ہے۔ افغان طالبان اس انتخابی عمل کو سبوتاژ کرنے کی دھمکی دے چکے ہیں۔

افغان وزارت داخلہ کے ترجمان نصرت رحیمی کے مطابق حملہ آور ایک موٹر سائیکل پر سوار تھا اور اس نے ریلی کی طرف جانے والے راستے پر چیک پوائنٹ پر خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔ خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق اس حملے کی ذمہ داری طالبان نے قبول کر لی ہے۔ 

Afghanistan Kabul | Ashraf Ghani nach Gebet zum Opferfest

یہ دھماکا افغان صدر اشرف غنی کی انتخابی ریلی کے قریب ہوا ہے۔ وہ خود اس حملے میں محفوظ رہے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی نے کابل کے ایک ہسپتال کے سربراہ ڈاکٹر عبدالقاسم سنگین کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس خودکش دھماکے کے نیتجے میں کم از کم 32 دیگر افراد زخمی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ہلاک اور زخمی ہونے والوں میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔

افغانستان میں صدارتی انتخابات کا انعقاد 28 ستمبر کو ہوگا۔

ڈی ڈبلیو کے ایڈیٹرز ہر صبح اپنی تازہ ترین خبریں اور چنیدہ رپورٹس اپنے پڑھنے والوں کو بھیجتے ہیں۔ آپ بھی یہاں کلک کر کے یہ نیوز لیٹر موصول کر سکتے ہیں۔

ا ب ا / ش ج (اے ایف پی، اے پی، روئٹرز)

DW.COM