نمونیے کا وائرس چینی علاقوں میں پھیل سکتا ہے، ڈبلیو ایچ او | صحت | DW | 18.01.2020
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

صحت

نمونیے کا وائرس چینی علاقوں میں پھیل سکتا ہے، ڈبلیو ایچ او

چین میں نمونیے کے مرض کا باعث بننے والے ایک نئے وائرس کے حوالے سے عالمی ادارہٴ صحت نے ایک انتباہ جاری کیا ہے۔ یہ انتباہ ایسے وقت میں دیا گیا جب چین میں نئے سال کے آغاز پر لاکھوں شہری تعطیلاتی سفر اختیار کرنے والے ہیں۔

عالمی ادارہٴ صحت نے متنبہ کیا ہے کہ نیا وائرس وبائی صورت میں کئی اور چینی علاقوں میں پھیل سکتا ہے۔ یہ انتباہ ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب اگلے ہفتے لاکھوں چینی شہری  نئے سال کی تعطیلات منانے کے لیے آبائی علاقوں اور بیرون ملک سفر اختیار کریں گے۔ نیا چینی قمری سال پچیس جنوری سے شروع ہو گا۔

عالمی ادارہٴ صحت اس وائرس کے دیگر ملکوں میں تشخیص کی تصدیق کر چکا ہے۔ کئی ایشیائی ممالک نے چین سے آنے والے مسافروں کی ابتدائی کلینیکل اسکریننگ کا آغاز کر دیا ہے۔ دوسری جانب عالمی ادارے نے واضح کیا ہے کہ اس وائرس پر ریسرچ اور اس کے خلاف مدافعت پیدا کرنے والی ویکسین کی تیاری کا سلسلہ شروع کر دیا گیا ہے۔

Hongkong Coronavirus | Mysteriöse Lungenkrankheit aus Wuhan (picture alliance/dpa/Informationsdienst der Hongkonger Regierung)

چینی ہسپتالوں میں طبی عملے نے بھی احتیاطی تدابیر اختیار کر رکھی ہیں

چینی محکمہٴ صحت نے تصدیق کی ہے کہ وسطی صوبے وُوہان میں نمونیے کا باعث بننے والے نئے وائرس کے مزید مریضوں کو ہسپتال پہنچایا گیا ہے۔ اب تک اس وائرس میں مبتلا ہونے والے دو چینی مریض ہلاک ہو چکے ہیں۔ وُوہان کے حکام نے بتایا ہے کہ نئے مریضوں کی حالت فی الحال مستحکم ہے۔ اس وبا کے پھیلنے سے اس وقت ہسپتال میں پچاس افراد نمونیے میں مبتلا ہیں۔

امریکی حکام نے اعلان کیا ہے کہ وہ چین سے آنے والے تمام مسافروں کی مکمل اسکریننگ شروع کر رہے ہیں۔ امریکا کے بیماریوں سے بچاؤ کے قومی ادارے نے مختلف بین الاقوامی ہوائی اڈوں پر ایک سو سے زائد افراد کی تعیناتی کا بھی بتایا ہے۔ یہ مسافروں میں بخار کی جانچ کے ساتھ ساتھ دیگر تشخیصی ٹیسٹ کرنے کے مجاز ہوں گے۔ اس سلسلے میں فوری طور پر سان فرانسسکو، لاس اینجلس اور نیویارک سٹی کے ہوائی اڈوں پر اسکریننگ شروع کی جا رہی ہے۔

Coronavirus (picture-alliance/dpa/Center for Disease Control)

عالمی ادارہٴ صحت اس وائرس کے خلاف مدافعت پیدا کرنے والی ویکسین کی تیاری کا سلسلہ شروع کر چکا ہے

چین میں نمونیے کی وبا بننے والے نئے وائرس کے دو مریضوں کی تھائی لینڈ اور ایک کی جاپان میں تشخیص کی جا چکی ہے۔ لندن کے امپیریل کالج کی تازہ رپورٹ کے مطابق چینی صوبے ووہان میں اس وائرس میں مبتلا افراد کی تعداد سترہ سو تیئیس کے لگ بھگ ہے۔ اس وائرس کی انسان سے انسانوں کو منتقلی ممکن ہے۔

کورونا وائرس سے ملتے جلتے اس نئے وائرس میں مبتلا ہونے والے مریض میں بظاہر نمونیا مرض کی نشانیاں پیدا ہوتی ہے۔ لیکن اس میں مریض کو سانس لینے میں شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ بخار کے ساتھ ساتھ مریض کو کھانسی بھی ہوتی ہے۔

ع ح ⁄ ع ا ( اے پی،روئٹرز)

ویڈیو دیکھیے 01:47

ایچ آئی وی کا مکمل خاتمہ، سائنسدان کامیاب

DW.COM