میرکل کی بطور یورپی کمیشن کے صدر حمایت کریں گے، ماکروں | حالات حاضرہ | DW | 12.06.2019
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

حالات حاضرہ

میرکل کی بطور یورپی کمیشن کے صدر حمایت کریں گے، ماکروں

یورپی پارلیمانی الیکشن کے بعد یورپی یونین کے اعلیٰ ترین عہدوں کے انتخاب کے لیے پارلیمانی گروپوں میں مشاورت جاری ہے۔ یورپی کمیشن کے منصبِ صدارت کے لیے فرانسیسی صدر نے چانسلر انگیلا میرکل کے امیدوار بننے کی حمایت کی ہے۔

فرانسیسی صدر ایمانوئل ماکروں نے سوئٹزرلینڈ کے براڈ کاسٹر آر ٹی ایس سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ چانسلر میرکل اپنے بارے میں یہ نہیں کہیں گی لیکن وہ اُن کے یورپی کمیشن کے صدر بننے کی حمایت کریں گے۔ یورپی یونین کا ایگزیکٹو شعبہ یورپی کمیشن کہلاتا ہے۔

یورپی یونین کے اعلیٰ ترین مناصب کے حتمی انتخاب کے تناظر میں ماکروں نے واضح کیا کہ یورپ کو اب نئے چہروں کے ساتھ ساتھ قوت کی بھی ضرورت ہے۔ جرمن چانسلر بار بار یہ کہہ چکی ہیں کہ وہ موجودہ چانسلر کی مدت کے مکمل ہونے پر سیاست کو خیرباد کہہ دیں گی۔ دوسری جانب یورپ کے سیاسی حلقوں میں یہ بات چل نکلی ہے کہ میرکل یورپی کمیشن کے صدر کا عہدہ سنبھالنے کے حوالے سے بھی سوچیں۔

سوئٹزرلینڈ کے فرانسیسی زبان کے چینل آر ٹی ایس کو انٹرویو دیتے ہوئے فرانس کے صدر ایمانوئل ماکروں نے ایک مرتبہ یورپی پیپلز پارٹی کے امیدوار مانفرڈ ویبر پر تنقید کی ہے اور کہا کہ وہ یورپی عوام کے لیے اجنبی ہیں اور انہوں نےیورپی پارلیمنٹ کے الیکشن کے سلسلے میں یورپ بھر جاری انتخابی مہم میں بھرپور حصہ بھی نہیں لیا تھا۔

Angela Merkel (picture-alliance/dpa/S. Rousseau)

جرمن چانسلر انگیلا میرکل کو یورپ کی ایک مدبر سیاستدان خیال کیا جاتا ہے

ماکروں نے یہ بھی کہا کہ یورپ کو ایسے چہروں کی ضرورت ہے جو مضبوط شخصیات حامل ہوں اور لوگ ان کی صلاحیتیں جانتے ہوئے اُن پر اعتماد کر سکیں۔ فرانسیسی صدر نے مزید کہا کہ جو بھی امیدوار ہو، وہ منصب کے مطابق قابلیت و اہلیت رکھتا ہو۔

یورپی کمیشن کے موجودہ صدر ژاں کلود ینکر کے عہدے کی میعاد رواں برس اکتیس اکتوبر کو ختم ہو رہی ہے۔ اس تاریخ سے قبل یورپی پارلیمنٹ کو ایک نئے اسپیکر کو منتخب کرنا ہے۔ یورپی پارلیمنٹ کے سب سے بڑی بلاک یورپی پیلز پارٹی کے امیدوار جرمن سیاستدان مانفرڈ ویبر ہیں۔ ینکر کا تعلق بھی اسی پارٹی سے ہے۔

رواں مہینے کے اوائل میں یورپی پیپلز پارٹی نے مانفرڈ ویبر کو ایک مرتبہ پھر اپنا لیڈر منتخب کیا ہے۔ ان کا انتخاب متفقہ طور کیا گیا۔ ژاں کلود ینکر کی جگہ پر مانفرڈ ویبر کو جیتنے کے لیے کم از کم دو مزید گروپوں کی حمایت درکار ہے۔ اس مناسبت سے اگلے ہفتے کے دوران ہونے والی یورپی یونین کی سمٹ نہایت اہم خیال کی گئی ہے۔

DW.COM