مہاجرین کو آسٹریا سے واپس ہنگری بھیجنے کا منصوبہ | مہاجرین کا بحران | DW | 18.06.2016
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

مہاجرین کا بحران

مہاجرین کو آسٹریا سے واپس ہنگری بھیجنے کا منصوبہ

آسٹریا نے کہا ہے کہ وہ غیر قانونی مہاجرت کو روکنے اور شینگن سرحدوں کی بہتر نگرانی کی خاطر ہمسایہ ملک ہنگری کی مدد پر تیار ہے۔ مہاجرین کے اس بحران کے دوران ہزاروں تارکین وطن ہنگری داخل ہونے میں کامیاب ہو چکے ہیں۔

خبر رساں ادارے روئٹرز نے آسٹرین وزارت دفاع کے حوالے سے بتایا ہے کہ ویانا حکومت ہنگری کو اپنی سرحدوں کی بہتر حفاظت اور نگرانی کے لیے تکنیکی آلات اور سکیورٹی اہلکار مہیا کرنے کو تیار ہے۔

DW.COM

آسٹرین وزارت دفاع کے ایک ترجمان کے مطابق دونوں ممالک اس حوالے سے مشاورت کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں اور آئندہ چار ہفتوں کے دوران اس تناظر میں ایک مجوزہ منصوبہ تیار کر لیا جائے گا۔

گزشتہ برس کے دوران ہزاروں مہاجرین اور تارکین وطن ہنگری داخل ہونے میں کامیاب ہو گئے تھے، جو بعد ازاں آسٹریا سے ہوتے ہوئے جرمنی اور دیگر وسطی اور شمالی یورپی ممالک کی طرف اپنا سفر جاری رکھنے میں کامیاب رہے تھے۔

مشرقی یورپ میں ہنگری شینگن زون کا رکن آخری ملک ہے اور اگر کوئی اس ملک میں داخل ہونے میں کامیاب ہو جاتا ہے تو وہ بغیر کسی روک ٹوک کے اس پورے ویزا فری بلاک میں سفر کر سکتا ہے۔

مہاجرین کے بحران میں یورپی رہنماؤں نے جہاں متعدد تجاویز مرتب کی تھیں، وہیں یہ بات بھی زیر بحث آئی تھی کہ شینگن زون کی بیرونی سرحدوں کی نگرانی اور حفاظت بہتر بنائی جائے تاکہ کوئی بھی غیر قانونی طور پر اس بلاک میں داخل ہونے میں کامیاب نہ ہو سکے۔

گزشتہ برس نوّے ہزار مہاجرین نے آسٹریا میں پناہ کی درخواستیں جمع کرائی تھیں۔ اس بحران کی شدت کی وجہ سے اب ویانا حکومت نے بھی دیگر یورپی ممالک کی طرح اپنی مہاجرت کی پالیسی میں کچھ سختی کی ہے۔ اس لیے ویانا حکومت نے کہا ہے کہ اس برس مہاجرین کی سینتیس ہزار پانچ سو درخواستیں قبول کی جائیں گی۔

Mazedonien Grenzübergang zu Griechenland Gevgelija

گزشتہ برس کے دوران ہزاروں مہاجرین اور تارکین وطن ہنگری داخل ہونے میں کامیاب ہو گئے تھے

ذرائع ابلاغ کی رپورٹوں کے مطابق آسٹریا اور ہنگری کے وزراء نے مہاجرت کے معاملے پر تفصیلی گفتگو کی، جس میں اس امر پر بھی بات چیت ہوئی کہ ہنگری کو اپنی جنوبی اور مشرقی سرحدوں کی نگرانی بہتر بنانے کے لیے ویانا حکومت کی طرف سے مدد فراہم کی جا سکتی ہے۔

اس دوران اس منصوبے پر بھی بات ہوئی کہ آسٹریا آنے والے ایسے مہاجرین کو واپس ہنگری روانہ کرنے کی کیا شرائط ہو سکتی ہیں، جنہوں نے پہلی مرتبہ پناہ کی درخواست ہنگری میں ہی جمع کرائی تھی۔

آسٹریا کی وزارت داخلہ نے بھی اس ملاقات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے متعلقہ اہلکار آئندہ چار ہفتوں کے دوران ایک ٹھوس منصوبہ تیار کر لیں گے۔

اشتہار