’مودی کرفیو اٹھائیں، پھر تماشا دیکھیں‘ | حالات حاضرہ | DW | 13.09.2019
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

حالات حاضرہ

’مودی کرفیو اٹھائیں، پھر تماشا دیکھیں‘

پاکستانی وزیراعظم نے مظفرآباد میں ایک جلسےسے خطاب میں کہا ہے کہ مودی کشمیریوں کو شکست نہیں دے سکتے، کیوں کہ ان میں موت کا ڈر ختم ہو چکا ہے۔ عمران خان نے کہا کہ وہ پوری دنیا میں کشمیر کے سفیر کی حیثیت سے سفر کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ میں بڑے عرصے بعد اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل، عالمی کونسل برائے انسانی حقوق اور یورپی یونین نے کشمیر کے موضوع پر بات کی ہے۔ عمران خان کا اس موقع پر کہنا تھا کہ بھارت کی جانب سے کشمیر میں کرفیو اور کریک ڈاؤن کی وجہ سے وہاں انتہاپسندی میں اضافہ ہو سکتا ہے۔

کشمیر کے مسئلے پر بامقصد اور سنجیدہ مذاکرات کی ضرورت ہے، جوہر سلیم

کشمیر کا لاوا

اپنے خطاب میں پاکستانی وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ مظفر آباد کے لوگوں کی اس جلسے میں شرکت سے کشمیری عوام کی رائے دنیا تک پہنچ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ  بھارت جب اپنے زیرانتظام حصے سے کرفیو کا خاتمہ کرے گا، تو اسے کشمیری عوام اپنے ردعمل سے آگاہ کر دیں گے۔ بعد میں جلسے سے سابق کرکٹ کپتان شاہد آفریدی اور دیگر معروف شخصیات نے بھی خطاب کیا۔

 پانچ اگست کو نریندر مودی حکومت کی جانب سے بھارت کے زیرانتظام کشمیر کو حاصل خصوصی دستوری حیثیت کے خاتمے کے بعد عمران خان کا پاکستان کے زیرانتظام کشمیر کا یہ تیسرا دورہ ہے۔  اس سے قبل وہ پاکستان کے یوم آزادی اور پھر چھ ستمبر کو مظفرآباد گئے تھے۔

DW.COM

ملتے جلتے مندرجات