فرنچ اوپن ٹینس ٹورنامنٹ میں بھی میچ فکسنگ کا شبہ، تفتیش شروع | کھیل | DW | 06.10.2020
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

کھیل

فرنچ اوپن ٹینس ٹورنامنٹ میں بھی میچ فکسنگ کا شبہ، تفتیش شروع

کرکٹ اور کئی دیگر سپورٹس میں میچ فکسنگ اور ڈوپنگ کے واقعات کے بعد اب ٹینس کے کھیل میں بھی مبینہ طور پر میچ فکسنگ کی جانے لگی ہے۔ فرانسیسی دفتر استغاثہ نے فرنچ اوپن میں میچ فکسنگ کی باقاعدہ چھان بین شروع کر دی ہے۔

اس میچ میں رومانیہ کی دو کھلاڑیوں کا مقابلہ روسی کھلاڑی یانا سیزیکووا اور امریکا کی میڈیسن برینگل (تصویر) کے مابین تھا

اس میچ میں رومانیہ کی دو کھلاڑیوں کا مقابلہ روسی کھلاڑی یانا سیزیکووا اور امریکا کی میڈیسن برینگل (تصویر) کے مابین تھا

فرانسیسی دارالحکومت پیرس سے منگل چھ اکتوبر کو ملنے والی رپورٹوں کے مطابق اس میچ فکسنگ کا شبہ ایک ایسے مقابلے کے حوالے سے کیا جا رہا ہے، جو ٹینس کے گرینڈ سلیم مقابلوں میں شمار ہونے والے فرنچ اوپن ٹورنامنٹ کا خواتین کا ایک ڈبلز مقابلہ تھا۔

نوواک جوکووچ لائن جج کو بال مارنے کی پاداش میں یو ایس اوپن سے باہر

امسالہ فرنچ اوپن کا پہلے راؤنڈ کا یہ ڈبلز میچ 30 ستمبر کو رومانیہ کی دو خواتین کھلاڑیوں آندریا میٹُو اور پیٹریشیا ماریا ٹِیگ اور روسی کھلاڑی یانا سیزیکووا اور امریکا کی میڈیسن برینگل کے مابین کھیلا گیا تھا۔

ماریا شارا پووا نے ٹینس کو خیرباد کہہ دیا

کھیلوں کی دنیا کے معروف فرانسیسی روزنامے 'لےکُوئیپ‘ اور جرمن جریدے 'دی وَیلٹ‘ کی رپورٹوں کے مطابق اس میچ کی جو گیم ٹینس کے ماہرین اور پراسیکیوٹرز کو مبینہ طور پر میچ فکسنگ کا نتیجہ محسوس ہوئی، وہ دوسرے سیٹ کی پانچویں گیم تھی، جو رومانیہ کی دونوں کھلاڑیوں نے won by love  کی بنیاد پر اس وقت جیتی تھی، جب دو مرتبہ روسی کھلاڑی سیزیکووا نے دوہری غلطی کی تھی۔

’لےکوئیپ‘ نے لکھا ہے کہ اس میچ کی متعلقہ گیم میں رومانیہ کی دونوں کھلاڑیوں کی ممکنہ جیت پر بہت بڑی رقوم کی شرطیں لگائی گئی تھیں۔

یہ شرطیں مبینہ طور پر کئی مختلف ممالک میں لیکن پیرس میں قائم متعدد بڑے سپورٹس گیمبلنگ اداروں کے ساتھ ان کے کارندوں کے ذریعے سٹے بازی میں لگائی گئی تھیں۔

سیرینا ولیمز ایک نیا ریکارڈ قائم کرنے میں ناکام

پیرس میں پراسیکیوٹرز نے بتایا کہ وہ فرنچ اوپن کے اس میچ میں 'ایک منظم گروہ کی صورت میں فراڈ‘ اور 'کھیلوں میں فعال اور غیر فعال کرپشن‘ کے مبینہ الزامات کے تحت چھان بین کر رہے ہیں۔

م م / ا ا (ڈی ہی اے، اے ایف پی)

DW.COM