جاپانی لذتِ دہن کی صدیوں پرانی روایت: بینٹو باکس | معاشرہ | DW | 01.08.2021
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

معاشرہ

جاپانی لذتِ دہن کی صدیوں پرانی روایت: بینٹو باکس

دنیا بھر میں دوپہر کے وقت طلبہ اور کام کرنے والے افراد صدیوں سے کھانا کھاتے چلے آ رہے ہیں۔ دوسری جانب جاپان میں سادہ سا لنچ کرنے کی مقبول روایت بھی اب اقوام عالم میں مقبول ہوتی جا رہی ہے۔

جاپان میں دوپہر کے کھانے یا 'بینٹو باکس‘ تیار کرنے کی روایت بارہویں صدی سے ملتی ہے۔ بتدریج اس میں مثبت تبدیلی وقوع پذیر ہوتی گئی اور معمول کے کھانے کے بجائے صحت مندانہ اور آسانی سے سنبھالے جانے والے کھانا اس باکس میں رکھا جانے لگا اور پھرعام لوگوں میں مقبول ہوتا گیا۔ اس کی مقبولیت کی ایک بڑی وجہ کام کے مقام پر اسے کھانے میں آسانی بھی ہے۔

پسینے سے صحت کا حال بتانے والی نئی ڈیوائس

جاپان میں سفری لنچ باکس کی روایت

جاپانی معاشرت میں سفری لنچ کی ابتدا کاما کُورا دور سے ہے۔ کاما کُورا دور کا باقاعدہ آغاز سن 1192 سے ہوتا ہے۔ اسی دور میں پہلے پہل ابلے چاولوں کو بانس کے پتے میں لپیٹا جاتا تھا۔ ان لپٹے ہوئے چاولوں کو کاشت کار اور کھیتوں میں کام کرنے والے مزدور اپنے ساتھ لے کر جاتے تھے۔

Japan - Bento Lunch Boxen

بینٹو باکس لنچ کے لیے اب کمرشل بنیادوں پر تیار کیے جاتے ہیں

اگلی چند صدیوں میں کھانے کو لپیٹنے کے اس انداز میں تبدیلیاں رونما ہوتی گئیں اور خوشنما باکس سامنے آنے لگے۔ خاص طور پر جاپانی اشرافیہ ایسے باکسز کو زیادہ پسند کرتی تھی اور یہ ان کی امارت کا بھی ایک ثبوت ہوا کرتا تھ‍ا۔

لنچ باکس کا جاپانی انداز

بظاہر یہ ایک عام سا معمول کا عمل ہے کہ ہر انسان کام کاج کے لیے نکلتے ہوئے دوپہر کے کھانے کے لیے کچھ نہ کچھ ساتھ لے کر جاتا  ہے، یہ ایک تاریخی انسانی رویہ ہے اور آج بھی کسی نا کسی صورت میں جاری ہے۔ اس تناظر میں جاپان میں لنچ باکس کوئی نیا رویہ قرار نہیں دیا جاتا۔ اب بینٹو کھانے کی روایت ایک جاپانی سلسلہ ہے جو بہت مقبول ہے۔

موٹے حضرات کیلوریز خرچ کریںاس میں پچاسی فیصد خوراک صحت مند ہوتی ہے اور اس کی قیمت بھی زیادہ نہیں کہ کوئی اسے خرید بھی نہ سکے۔  یہ بات ضرور طے ہے کہ جاپانی لوگوں نے لنچ باکس تیار کرنے کی روایت کو بہتر ضرور بنا دیا ہے۔

Japan - Bento Lunch Boxen

بینٹو باکس میں رکھے گئے کھانے کو صحت مندانہ خیال کیا جاتا ہے

بینٹو باکس

ایسا تاثر ہے کہ بینٹو لنچ باکس اب کھانے سے زیادہ ایک محبت بھری روایت بن چکا ہے اور عام لوگ اس کے ساتھ وابستہ رہنے کو ترجیح دیتے ہیں۔ ایک جاپانی معاشرتی رویہ یہ بھی ہے کہ اسکول جانے والے بچوں کو پیار سے بوسہ نہیں دیا جاتا لیکن ان بچوں کی ماؤں کی محبت کھانا پکانے سے ظاہر ہوتی ہے۔

تربوز میٹھا ہے یا نہیں؟ لیجیے جواب مل گیا

جاپان کے حکومتی نگرانی میں چلنے والے ریڈیو این ایچ کے ایک پروگرام کے میزبان مارک ماٹسُوموٹو کا کہنا ہے کہ ان کی ماں جاپانی تھیں اور ان کی ابتدئی پرورش امریکی ریاست کیلیفورنیا میں ہوئی تھی، جب وہ اسکول جاتے تو ان کی والدہ رخصتی کا بوسہ نہیں دیتی تھیں لیکن ان کی تمام تر محبت کا اظہار لنچ باکس سے ہوتا تھا۔

Syrischer Koch Imad Alarnab unterstützt Flüchtlinge in London

بینٹو باکس میں رکھا کھانا کم کیلوریز پر مشتمل ہوتا ہے

بینٹو باکس کی افادیت

مارک ماٹسوموٹو کا کہنا ہے کہ بینٹو باکس کی افادیت میں ایک بات واضح ہے کہ اس میں کھانے کی اشیا کی تعداد محدود ہوتی ہے اور جب اس کی عادت ہو جائے تو پھر تھوڑی اشیا والا باکس بھی ختم کرنا مشکل ہو جاتا ہے کیونکہ کم کھانے کی عادت ہو جاتی ہے۔

ماٹسوموٹو کے مطابق ایک بینٹو باکس میں کیلوریز کا مجموعی حجم چھ سو سے سات سو تک ہوتا ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ ایک بینٹو باکس دیکھنے میں بھی خوبصورت دکھائی دیتا ہے کیونکہ اس میں رکھی سبزیاں اور پھل بقیہ کھانے کو بھی دلکش بنا دیتے ہیں۔

جولیان رویال، ٹوکیو (ع ح / ع ت)