1. مواد پر جائیں
  2. مینیو پر جائیں
  3. ڈی ڈبلیو کی مزید سائٹس دیکھیں
Nancy Pelosi hält Pressekonferenz in Tokio
تصویر: Issei Kato/REUTERS
معاشرہتائیوان

امریکہ تائیوان کو 'تنہا' نہیں چھوڑے گا، نینسی پیلوسی

5 اگست 2022

امریکی ایوان نمائندگان کی اسپیکر نینسی پیلوسی ایشیا کے اپنے دورے کے آخری مرحلے میں ٹوکیو پہنچ گئی ہیں۔ تائیوان کے اپنے متنازعہ دورے کے بعد پیلوسی نے کہا کہ امریکہ خطے کی موجودہ حالت میں کسی طرح کی تبدیلی نہیں چاہتا۔

https://www.dw.com/ur/%D8%A7%D9%85%D8%B1%DB%8C%DA%A9%DB%81-%D8%AA%D8%A7%D8%A6%DB%8C%D9%88%D8%A7%D9%86-%DA%A9%D9%88-%D8%AA%D9%86%DB%81%D8%A7-%D9%86%DB%81%DB%8C%DA%BA-%DA%86%DA%BE%D9%88%DA%91%DB%92-%DA%AF%D8%A7-%D9%86%DB%8C%D9%86%D8%B3%DB%8C-%D9%BE%DB%8C%D9%84%D9%88%D8%B3%DB%8C/a-62718389

امریکی کانگریس کی اسپیکر نینسی پیلوسی نے ایشیا کے اپنے دورے کے آخری مرحلے میں جمعے کے روز جاپان کے دارالحکومت ٹوکیو پہنچنے پر نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ تائیوان کو الگ تھلگ کرنے کی چین کو اجازت نہیں دے گا۔ وہ تائیوان کے متنازع دورے، جس نے بیجنگ کو مشتعل کردیا ہے، کے بعد ٹوکیو پہنچی ہیں۔

پیلوسی نے کیا کہا؟

پیلوسی نے جاپانی وزیر اعظم فومیو کیشیدا کے ساتھ بات چیت کے بعد نامہ نگاروں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا،

"وہ تائیوان کوکسی جگہ کا دورہ کرنے سے یا اسے دیگر مقامات پر شرکت کرنے سے روکنے کی کوشش کرسکتے ہیں لیکن وہ ہمیں وہاں جانے سے روکنے کی کوشش کر کے تائیوان کو الگ تھلگ نہیں کرسکتے۔"

امریکی ایوان نمائندگان کی اسپیکر نے کہا،"ہم نے اعلی سطحی دورے کیے ہیں، ہمارے سینیٹرز وہاں گئے ہیں، دوروں کا سلسلہ جاری ہے اور ہم انہیں تائیوان کو تنہا کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔"

پیلوسی نے کہا کہ سنگا پور، ملائشیا، تائیوان، جنوبی کوریا اور جاپان کا ان کا دورہ "صورت حال میں کسی طرح کی تبدیلی کے لیے نہیں تھا۔"

ان الزامات کے جواب میں کہ ان کے دورے سے پتہ چلتا ہے کہ امریکہ تائیوان کی آزادی کی حمایت کرتا ہے، پیلوسی نے کہا،"ہم شروع سے ہی کہتے رہے ہیں کہ ہماری یہاں نمائندگی ایشیا میں، یا تائیوان میں، موجودہ صورت حال میں کسی طرح کی تبدیلی کے لیے نہیں ہے۔ "

 انہوں نے کہا، "یہ تائیوان ریلیشنز ایکٹ کا حصہ ہے، امریکہ چین پالیسی کے تحت ہے۔ ان تمام قوانین اور معاہدوں کے تحت ہے جن کی بنیاد پر ہمارے تعلقات قائم ہیں۔ یہ دورہ آبنائے تائیوان میں امن کی صورتحال جوں کا توں برقرار رکھنے کے لیے تھا۔"

Kishida empfängt Pelosi
تصویر: Kyodo/dpa/picture alliance

پیلوسی کی جاپانی وزیر اعظم سے ملاقات

جاپان کے وزیر اعظم فومیوکیشیدا نے کہا کہ چین کے اقدامات ہمارے خطے اور عالمی برادری کے امن و استحکام پر سنگین اثرات مرتب کر رہے ہیں۔

 فومیوکیشیدا نے تائیوان کے گرد فوجی مشقوں کے دوران چین کی جانب سے بیلسٹک میزائل داغنے کی مذمت کی اور انہیں ''ایک سنگین مسئلہ قرار دیا ہے جو قومی سلامتی اور شہریوں کی سکیورٹی کو متاثر کرتا ہے۔''

انہوں نے نینسی پیلوسی سے ملاقات کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ "اس بار چین کے اقدامات ہمارے خطے اور عالمی برادری کے امن و استحکام پر سنگین اثرات مرتب کر رہے ہیں۔ " انہوں نے مزید کہا،"میں نے انہیں بتایا ہے کہ ہم نے فوجی مشقوں کو فوری طور پر منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔"

فومیو کیشیڈا نے کہا کہ انہوں نے نینسی پیلوسی کے ساتھ شمالی کوریا، چین اور روس سے متعلق معاملات کے علاوہ جیوپولیٹیکل امور پر تبادلہ خیال کیا۔

Taiwan China Konflikt Manöver
تصویر: Hector Retamal/AFP

پیلوسی کے دورے سے چین ناراض

چین کی وزارت خارجہ نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ نینسی پیلوسی کے دورے نے آبنائے تائیوان کے استحکام کو نقصان پہنچایا ہے۔

چین تائیوان کو اپنی سرزمین کا ہی ایک حصہ قرار دیتا ہے۔ پیلوسی کے دورے کے بعد جوابی کارروائی کے طورپر بیجنگ میں تائیوان کے اطراف میں بڑے پیمانے پر غیر معمولی جنگی مشقیں شروع کردی ہیں۔

چین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ژنہوا کا کہنا ہے کہ اس جنگی مشق میں 100سے زائد جنگی طیارے اور 10جہاز بھی حصہ لے رہے ہیں۔

 ج ا/ ص ز (اے پی، اے ایف پی، روئٹرز)

ڈی ڈبلیو کی اہم ترین رپورٹ سیکشن پر جائیں

ڈی ڈبلیو کی اہم ترین رپورٹ

Pakistan | Monsun Überschwemmungen

کئی ملین پاکستانی سیلاب متاثرین کو غذائی بحران کا سامنا

ڈی ڈبلیو کی مزید رپورٹیں سیکشن پر جائیں
ہوم پیج پر جائیں