1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ممبئی حملوں میں ISI کا قریبی تعاون: خفیہ بھارتی رپورٹ

ایک خفیہ بھارتی رپورٹ کی تفصیلات منظرِ عام پر آئی ہیں، جس میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کے اہم ترین خفیہ ادارے آئی ایس آئی نے 2008 میں بھارتی شہر ممبئی پر ہونے والے دہشت پسندانہ حملوں کی تیاری میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

default

ممبئی کا تاج ہوٹل حملے کی زَد میں

خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کا کہنا ہے کہ اُسے اِس رپورٹ کی ایک نقل پیر کو ملی ہے جبکہ خبر رساں ادارے اے ایف پی نے یہ خبر برطانوی اخبار ’گارڈین‘ کے حوالے سے جاری کی ہے۔ اِس رپورٹ میں اِن حملوں کی تیاریوں کے سلسلے میں اہم کردار ادا کرنے والے امریکی شہری ڈیوڈ ہیڈلی کے ساتھ بھارتی تفتیش کاروں کی اُس بات چیت کا حوالہ دیا گیا ہے، جو اِس سال جون میں عمل میں آئی تھی اور جو مجموعی طور پر 34 گھنٹے تک جاری رہی تھی۔

نومبر سن 2008ء میں دَس مسلح افراد کی طرف سے تین روز تک کئے گئے اِن دہشت پسندانہ حملوں میں 166 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ ڈیوڈ ہیڈلی امریکہ میں اپنی گرفتاری کے بعد وہاں کے تحقیقاتی اداروں کے سامنے اِس بات کا اعتراف کر چکا ہے کہ اُس نے اِن حملوں کی تیاری کے سلسلے میں ایک اہم کردار ادا کیا تھا۔ ہیڈلی نے یہ اعتراف اِس وعدے پر کیا تھا کہ اُسے نہ تو بھارت کے حوالے کیا جائے گا اور نہ ہی موت کی سزا دی جائے گی۔

Zeichnung Gericht David Coleman Headley vor Richter Harry Leineweber

نو دسمبر دو ہزار نو کے اِس تصویری خاکے میں ڈیوڈ کول مین ہیڈلی کو ایک امریکی کمرہء عدالت میں دکھایا گیا ہے

خفیہ بھارتی رپورٹ کے مطابق ڈیوڈ ہیڈلی نے بھارتی تفتیش کاروں کو پوری تفصیل کے ساتھ بتایا کہ اِن حملوں میں پاکستانی خفیہ ادارے انٹر سروسز انٹیلی جینس نے مدد فراہم کی تھی۔ بھارت الزام عائد کرتا ہے کہ اِن حملوں میں بنیادی کردار پاکستان میں کالعدم تنظیم لشکرِ طیبہ نے ادا کیا تھا۔ 109صفحات پر مشتمل اِس خفیہ رپورٹ کے مطابق ہیڈلی نے بتایا کہ آئی ایس آئی اور لشکرِ طیبہ کے عسکریت پسندوں کے درمیان درجنوں ملاقاتیں ہوئی تھیں۔

’گارڈین‘ کے مطابق ہیڈلی کا دعویٰ ہے کہ آئی ایس آئی پاکستانی ریاست کے ساتھ روابط رکھنے والی اُن عسکریت پسند تنظیموں کو زیادہ طاقتور بنانے کی کوشش کر رہی تھی، جو دیگر زیادہ انتہا پسند گروپوں کی وجہ سے پس منظر میں جا رہے تھے۔

Mohammed Ajmal Kasab

ممبئی حملوں میں ملوث ہونے پر موت کی سزا پانے والا اور دَس حملہ آوروں میں سے واحد زندہ بچ جانے والا محمد اجمل قصاب

ڈیوڈ ہیڈلی ایک سابق پاکستانی سفارت کار اور ایک سفید فام امریکی خاتون کا بیٹا ہے اور اُس کا اصل نام داؤد گیلانی بتایا جاتا ہے۔ برطانوی جریدے کے مطابق ہیڈلی کا دعویٰ ہے کہ اُس کے کم از کم دو مشن ایسے تھے، جس کے لئے مالی وسائل جزوی طور پر آئی ایس آئی کی طرف سے فراہم کئے گئے تھے اور یہ کہ وہ باقاعدگی کے ساتھ اِس خفیہ ایجنسی کو رپورٹیں دیا کرتا تھا۔

اِس رپورٹ میں البتہ یہ بھی کہا گیا ہے کہ آئی ایس آئی کی جانب سے عسکریت پسندوں کی نگرانی کا عمل اکثر ابتری کا شکار رہتا تھا اور یہ کہ اِس بات کا امکان موجود ہے کہ زیادہ سینئر افسران حملے شروع ہونے سے پہلے اِس بات سے ناواقف ہوں کہ یہ کتنے بڑے پیمانے پر ہوں گے۔

’گارڈین‘ نے آئی ایس آئی کے ایک ترجمان کا حوالہ دیا ہے، جس کا کہنا تھا کہ ممبئی حملوں میں پاکستانی خفیہ ادارے کے ملوث ہونے کے الزامات ’بے بنیاد‘ ہیں۔

رپورٹ: امجد علی / خبر رساں ادارے

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس