’ہیپاٹائٹس سی کی دوائیں موت کا باعث بھی‘ | صحت | DW | 23.10.2015
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

صحت

’ہیپاٹائٹس سی کی دوائیں موت کا باعث بھی‘

امریکی انتظامیہ برائے خوراک و ادویات FDA نے کہا ہے کہ پیپاٹائٹس کے مرض کے خلاف استعمال کی جانے والی دو ادویات ایسی ہیں، جو جگر کو شدید نقصان پہنچاتی ہیں اور کچھ مواقع پر یہ مریضوں کی اموات کی وجہ بھی بنی ہیں۔

اس امریکی وفاقی ادارے نے خبردار کیا ہے کہ ان ادویات کے استعمال میں احتیاط سے کام لینا چاہیے۔ اس امریکی ایجنسی کی جانب سے بتایا گیا ہےکہ ویکیرا پاک (Viekira Pak) اور ٹیکنیوی (Technivie) نامی ادویات کے استعمال کے حوالے سے دیکھا گیا ہے کہ یہ جگر کے کام کرنا چھوڑ دینے یا اس جیسی کیفیات کا باعث بنتی ہیں، جس کی وجہ سے نتیجہ یا تو موت کی صورت میں برآمد ہو سکتا ہے، یا نوبت جگر کی پیوندکاری تک بھی پہنچ جاتی ہے۔

بتایا گیا ہے کہ ان ادویات کا سب سے زیادہ برا اثر ان افراد پر دیکھا گیا، جنہیں ہیپاٹائٹس سی سے قبل جگر کی خرابی کا مسئلہ درپیش رہا ہو۔ یہ ادویات شکاگو میں قائم ایک دواساز ادارہ ایب وائی (AbbVie) تیار کرتا ہے۔

یہ ادویات تیار کرنے والی کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ اس وفاقی ادارے کی ہدایات کے مطابق ان دواؤں کے ڈبوں پر احتیاطی تدابیر درج کر رہی ہے اور اس بات پر بھی زور دیا جائے گا کہ پہلے سے جگر کی خرابی کے شکار مریض اس دوا کا استعمال ہرگز نہ کریں۔ تاہم اس ادارے نے اصرار کیا ہے کہ ان ادویات اور جگر کو پہنچنے والے نقصان کے درمیان باقاعدہ تعلق ابھی واضح نہیں ہوا۔

Hepatitis C

ہیپاٹائٹس سی وائرس جگر کو شدید متاثر کرتا ہے

امریکا کی فیڈرل ڈرگ ایڈمنسٹریشن کے مطابق ان دواؤں کے استعمال کی اجازت دیئے جانے کے بعد عالمی سطح پر ایسے کم از کم 26 کیسز سامنے آئے ہیں، جن میں ان ادویات کے استعمال اور جگر کو پہنچنے والے نقصان کے درمیان تعلق دیکھا گیا ہے۔

یہ بات اہم ہے کہ ویکیرا پاک (Viekira Pak)کی فروخت کی اجازت دسمبر 2014 میں جب کہ ٹیکنیوی (Technivie) کی فروخت کی اجازت جولائی میں دی گئی تھی۔

FDA کا یہ بھی کہنا ہے کہ ان ادویات کی وجہ سے جگر کو پہنچنے والا زیادہ نقصان صرف اسی صورت میں دیکھا گیا ہے کہ اگر جگر کو لاحق بیماری بہت بڑھ چکی ہو۔ اس امریکی ادارے نے مریضوں سے یہ بھی کہا ہے کہ جو مریض یہ دوائیں لے رہے ہیں، وہ اپنے معالج کے مشورے کے بغیر ان کا استعمال ہرگز ترک نہ کریں، کیوں کہ ایسا کرنے سے ان کا ہیپاٹائٹس کا مرض دیگر ادویات کے خلاف مزاحمت کا حامل ہو جائے گا۔