ہوائی جہاز میں سفر، صرف ماسک کے ساتھ؟ | حالات حاضرہ | DW | 20.04.2020
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

جرمنی

ہوائی جہاز میں سفر، صرف ماسک کے ساتھ؟

تنگ جگہ پر بہت زیادہ افراد: ہوائی جہاز میں کورونا وائرس پھیلنے کا نسبتا زیادہ خطرہ ہوتا ہے۔ جرمن سول ایوی ایشن کی تجاویز کے مطابق سفر کے دوران دیگر حفاظتی ضوابط پر عمل کے ساتھ مسافروں کو ’چہرے پر ماسک‘ لازمی پہننا چاہیے۔

جرمن شہری ہوا بازی اور ایئر لائنز کی تنظیمیں کورونا وائرس کے وبائی مرض کے پھیلاؤ پر قابو پانے کے لیے فضائی سفر کے دوران مسافروں کو لازمی حفاظتی ماسک پہننے کی تجویز پر غور کر رہی ہیں۔ اس حوالے سے جرمن اخبار فرانکفرٹر الگمائنے سائٹنگ نے بتایا ہے کہ ان مجوزہ ضوابط کے مطابق، ''بورڈنگ یعنی جہاز میں سوار ہونے، پرواز کے دوران اور جہاز سے اترتے وقت اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ ہر مسافر نے حفاظتی ماسک پہن رکھا ہو۔‘‘ ایف اے زیڈ اخبار کی اطلاعات کے مطابق مجوزہ حفاظتی ضوابط کے کُل بیس نکات ہیں اور یہ تمام تجاویز جرمن ایئر لائنز اور ہوائی اڈوں کی مشاورت کے بعد تیار کی گئی ہیں۔
یہ بھی پڑھیے: جرمنی میں ٹرینیں خالی اور مسافر غائب مگر سروس جاری

'چیک اِن‘ کے دوران 'چیکنگ‘
جرمن اخبار نے نے مزید بتایا ہے کہ مسافروں کو لازمی طور پر چہرے پر ماسک کے ساتھ سفر کرنا ہوگا جب کہ ایئر پورٹ پہنچنے سے قبل دیگر حفاظتی اقدامات بھی شامل ہیں۔ مثال کے طور پر مسافروں کو آن لائن چیک اِن کے دوران یہ معلومات فراہم کرنی ہوگی کہ وہ تندرست ہیں اور خاص طور پر کورونا وائرس سے متاثر نہیں ہیں۔


علاوہ ازیں ان تجاویز میں کہا گیا ہے کہ ایئر پورٹ پر تمام مسافروں کو آپس میں فاصلے برقرار رکھنا ہوگا، فرش پر فاصلے کے نشانات لگائے جائیں گے جب کہ زیادہ سے زیادہ کاؤنٹر کھولے جائیں گے تاکہ مسافروں کی آمد ورفت میں کم سے کم وقت لگے۔ اس کے ساتھ ساتھ درجہ حرارت کی اسکریننگ کا بندوبست بھی کیا جائے گا۔ تاہم طیارے میں سیٹوں کے درمیان خالی نشست کے بارے میں تجویز کو ابھی تک اس فہرست میں شامل نہیں کیا گیا۔
ع آ / ع ح (ایف اے زیڈ، اے ایف پی، ڈی پی اے)

DW.COM

Audios and videos on the topic