1. مواد پر جائیں
  2. مینیو پر جائیں
  3. ڈی ڈبلیو کی مزید سائٹس دیکھیں
معاشرہکویت

کویت میں رہائشی عمارت میں آگ لگنے سے اکتالیس افراد ہلاک

12 جون 2024

کویتی حکام کے مطابق بدھ بارہ جون کو صبح سویرے ایک ایسی رہائشی عمارت کو آگ نے اپنی لپیٹ میں لے لیا جس میں زیادہ تر مزدور رہتے تھے۔ اس آتش زدگی کے باعث آخری اطلاعات ملنے تک کم از کم اکتالیس افراد ہلاک ہوگئے۔

https://p.dw.com/p/4gxc4
Kuwait Mangaf | Tote nach Brand in Gebäude
تصویر: Yasser Al-Zayyat/AFP/Getty Images

کویتی وزیر داخلہ شیخ فہد الیوسف الصباح نے ان کم از کم 41 ہلاکتوں کی تصدیق کر دی ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ اس عمارت میں  آگ غالباً کووڈ کی وبا کے دوران نافذ کیے گئے ضوابط کی خلاف ورزی کے باعث لگی۔ ملکی وزیر داخلہ نے اس عمارت کے مالک کی گرفتاری کا حکم جاری کر دیا ہے۔

کویتی ذرائع ابلاغ کی رپورٹوں کے مطابق وزیر داخلہ شیخ فہد الیوسف الصباح نے اس سانحے کے بعد ایک بیان میں کہا، ''ہمیں مزدوروں کی رہائشی عمارات میں اکثر بہت زیادہ بھیڑ رہنے کے مسئلے کا سامنا ہے، لیکن ہم اس مسئلے کو حل کریں گے۔‘‘

کویت کی اس رہائشی عمارت میں آگ لگی
کویت سٹی سے جنوب کی طرف منگاف کے علاقے کی اس عمارت میں آگ لگیتصویر: Yasser Al-Zayyat/AFP/Getty Images

انہوں نے مزید کہا، ''اب میں ذاتی طور پر یہ مشاہدہ کرنے وہاں جا رہا ہوں کہ اس عمارت میں مروجہ ضوابط کی کس طرح کی خلاف ورزیاں کی گئیں۔ اس رہائشی عمارت کے مالک کے خلاف بھی کارروئی کی جائے گی۔‘‘

مقامی میڈیا کے مطابق کویت سٹی سے جنوب کی طرف منگاف کے علاقے میں اس کئی منزلہ عمارت میں سینکڑوں کارکن رہ رہے تھے۔ یہ نہیں بتایا گیا کہ ان کارکنوں کی قومیتیں کیا تھیں۔

فائر بریگیڈ شعبے کے سربراہ کرنل سید حسن الموسوی نے بتایا کہ  آتش زدگی  کے اس واقعے میں درجنوں ہلاکتیں ہوئیں اور مرنے والوں کی حتمی تعداد 41 سے زیادہ بھی ہو سکتی ہے۔

اس عمارت میں لگنے والی آگ کے سبب کم از کم 41 افراد ہلاک
کم از کم 41 ہلاکتوں کی تصدیق تصویر: Stringer/REUTERS

خلیج فارس کی دیگر عرب ریاستوں کی طرح کویت میں بھی زیادہ تر محنت مزدوری کرنے والے غیر ملکی کارکنوں کی ایک بڑی تعداد آباد ہے۔ اپنی آبادی میں تارکین وطن کارکن مقامی کویتی آبادی سے زیادہ ہیں۔

کُل تقریباً 4.2 ملین کی آبادی والا ملک کویت اپنے رقبے میں امریکی ریاست نیو جرسی سے بھی چھوٹا ہے، لیکن یہ خلیجی ریاست اپنے ہاں خام تیل کے ذ‌خائر کے حوالے سے دنیا بھر میں چھٹے نمبر پر ہے۔

ک م/م م (اے پی ای)