کورونا وائرس نے عمرے کی ادائیگی کو بھی متاثر کر دیا | حالات حاضرہ | DW | 27.02.2020
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

حالات حاضرہ

کورونا وائرس نے عمرے کی ادائیگی کو بھی متاثر کر دیا

سعودی حکام نے جمعرات ستائیس فروری سے کورونا وائرس کی وبا کے تناظر میں عمرے کے ویزے کا اجراء معطل کر دیا ہے۔ اس پابندی سے رواں برس کے حج کی ادائیگی پر بھی سوالات کھڑے ہو گئے ہیں۔

کورونا وائرس کے پھیلاؤ کی علاقائی صورت حال کو دیکھتے ہوئے عمرے کی ادائیگی کے ویزے جاری کرنے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ سعودی وزارت خارجہ نے اس تناظر میں یہ وضاحت بھی کی ہے کہ سیاحتی ویزوں پر بھی پابندی عائد کی گئی ہے لیکن یہ پابندی عارضی ہے۔ ابھی تک سعودی عرب میں اس بیماری میں مبتلا کسی بھی مریض کی نشاندہی نہیں ہوئی ہے۔

سعودی عرب میں مسلمانوں کے مقدس ترین شہر مکہ اور مدینہ واقع ہیں۔ لاکھوں حاجی ہر سال حج کے دوران ان شہروں میں واقع مقدس زیارات کے لیے مذہبی جوش و خروش سے سفر اختیار کرتے ہیں۔ اب دنیا بھر میں کورونا وائرس کی نئی قسم سے نمونیا بیماری کے پھیلنے کی وجہ سے حج کرنے کی منصوبہ بندی کرنے والے افراد میں پریشانی کی لہر دوڑ گئی ہے۔

لندن میں قائم ایک تھنک ٹینک گلوبل ایسوسی ایٹس کے بانی غنم نصیبہ نے عمرے پر لگائی جانے والی پابندی کو غیر معمولی قرار دیا ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ سعودی حکام کو مقدس مہینے رمضان کے شروع ہونے پر عمرہ کرنے والے زائرین کی تعداد میں اضافے پر ممکنہ طور پر وبا پھیلنے کی تشویش لاحق ہوگئی ہے۔ اسلامی کیلینڈر کا نواں مہینہ رمضان رواں برس اپریل کے آخری ہفتے میں شروع ہو رہا ہے۔

Saudi-Arabien Mekka 2019 | Kaaba (picture-0alliance/ZUMAPRESS/A. Amra)

یہ بھی ایک مشکل سوال ہے کہ آیا رواں برس حج کے وقت تک ویزوں کے اجرا پر پابندی عائد رہے گی

دوسری جانب سعودی عرب کی ہمسایہ خلیجی ریاستوں متحدہ عرب امارات، عُمان، کویت اور بحرین میں کورونا وائرس کی مختلف افراد میں تشخیص کی جا چکی ہے۔ یہ بھی بتایا گیا کہ خلیجی ریاستوں میں کورونا وائرس ایران سے واپس لوٹنے والے عرب شہریوں سے پہنچا ہے۔

متحدہ عرب امارات میں تیرہ مریض اس وائرس میں مبتلا ہیں۔ کویت میں ایسے مریضوں کی تعداد تینتالیس ہے۔ بحرین میں تینتیس افراد میں کورونا وائرس کی تشخیص ہو چکی ہے۔ عُمان میں چار مریض ہے۔ کویت میں قرنطینہ کیے گئے مریضوں میں ایک سعودی شہری بھی شامل ہے۔

اسی طرح سعودی عرب کے علاقائی حریف ملک ایران میں نمونیا بیماری کا باعث بننے والے وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد بائیس تک پہنچ گئی ہے۔ اس مرض میں مبتلا افراد کی تعداد ایک سو چالیس سے بڑھ گئی ہے۔ ایران میں ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد چین کے بعد سب سے زیادہ ہے۔

ع ح ⁄  ع ت (اے ایف پی، روئٹرز)

ویڈیو دیکھیے 03:50

انڈونیشیا میں حجاب کا مقامی کاروبار

DW.COM