کمپیوٹر پر فحش مواد کی موجودگی، وزیر برطرف | معاشرہ | DW | 21.12.2017
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

کمپیوٹر پر فحش مواد کی موجودگی، وزیر برطرف

برطانیہ کی وزیراعظم ٹریزا مَے نے اپنے سینیئر وزیر ڈامیئن گرین کو برطرف کر دیا ہے۔ ان پر الزام تھا کہ انہوں نے اپنے پارلیمانی دفتر کے کمپیوٹر پر فحش مواد کی موجودگی کے حوالے سے جھوٹ بولا تھا۔

 ڈامیئن گرین برطانوی وزیراعظم کے انتہائی قریبی اتحادی خیال کیے جاتے ہیں اور اُن کے مستعفی ہونے کو حکومت کے لیے ایک دھچکا قرار دیا گیا ہے۔ اُن کے دفتری کمپیوٹر میں فحش مواد کی دستیابی کے بارے میں سنڈے ٹائمز اخبار نے رپورٹ کیا ہے۔ یہ مواد سن 2008 میں پولیس کو تلاشی کے دوران ملا تھا۔

ہراساں کیا، جی نہیں! برطانوی سیاست میں ایک اور اسکینڈل

نصف سے زائد برطانوی خواتین کو جنسی ہراس کا سامنا

DW.COM

اشتہار