ٹرمپ ناسمجھ اور ناشکرے ہیں، عمران خان | حالات حاضرہ | DW | 03.01.2018
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ٹرمپ ناسمجھ اور ناشکرے ہیں، عمران خان

پاکستان کے سابق مشہور کرکٹر اور موجودہ سیاستدان عمران خان نے امریکی صدر کو ناشکر گزار قرار دیا ہے۔ عمران خان نے ڈونلڈ ٹامپ کو اُن کے حالیہ بیان کے تناظر میں ناسمجھ بھی کہا ہے۔

پاکستان کی اپوزیشن سے تعلق رکھنے والی سیاسی جماعت پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان نے ٹرمپ انتظامیہ پر تنقید کرتے ہوئے امریکی صدر سے کہا ہے ک وہ اس حوالے سے وضاحت کریں کہ ایک دو ہزار حقانی نیٹ ورک کے کارکن، جو بقول امریکی صدر کے پاکستان میں چھپے بیٹھے ہیں، وہ کس طرح انتہائی جدید اسلحے سے لیس امریکی فوج کی کامیابی میں میں حائل ہیں۔

’میرا نام خان ہے اور میں دہشت گرد نہیں‘

’نریندر مودی ابھی تک اپنی نسل پرستانہ سوچ سے باہر نہیں نکل سکے‘

ٹرمپ کے بیان نے پاکستانیوں کو تکلیف پہنچائی، عمران خان

’پاکستان ’دہرا کھیل‘ کھیل رہا ہے، امریکا کا الزام

عمران خان نے اپنے جوابی ٹویٹس میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی شمولیت کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ اس دہشت گردی کی جنگ میں پاکستان امریکی اتحادی ہے۔ عمران خان نے واضح کیا کہ وہ پہلے دن سے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستانی شمولیت کی مخالفت کرتے چلے آ رے ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین نے کہا کہ اس جنگ میں شرکت کر کے پاکستان کو جو سبق حاصل ہوا ہے، وہ یہ ہے کہ کم مدتی مالی فائدہ حاصل کرنے کے لیے کبھی کسی دوسرے کے ہاتھ میں کھلونا نہیں بننا چاہیے۔ عمران خان کا یہ بیان ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب ٹرمپ کے بیان پر پاکستانی حکومتی اہلکار بھی اپنی بیان بازی کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں۔

Pakistan Imran Khan, Oppositionspolitiker (DW/S. Khan Tareen)

مران خان نے ڈونلڈ ٹامپ کو اُن کے حالیہ بیان کے تناظر میں ناسمجھ بھی کہا ہے۔

عمران خان کے جوابی ٹویٹس کو امریکی صدر کی جانب سے نئے سال کے موقع پر پاکستان کے خلاف کیے جانے والے ٹویٹس کا جواب قرار دیا گیا ہے۔ اپنے ٹویٹس میں سابق کرکٹر نے کہا کہ پاکستان پر دہشت گردوں کی حمایت جاری رکھنے کا الزام لگانے سے جہاں ڈونلڈ ٹرمپ کی ناسمجھی سامنے آئی ہے وہاں اُن کے ناشکرگزار ہونے کا بھی اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔

عمران خان نے یہ بھی کہا کہ پاکستان کے وقار کو اس بیان سے شدید دھچکا پہنچا ہے اور یہ افسوس ناک ہے کہ امریکا اپنے ناکامی کے لیے اسلام آباد حکومت کو قربانی کا بکرا بنانا چاہتا ہے۔ ٹرمپ نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ امریکا نے نادانی میں اربوں ڈالر پاکستان کو دیے اور جواب میں واشنگٹن حکومت کو کچھ حاصل نہیں ہوا ہے۔ اس دوران پاکستانی حکومت کی سکیورٹی میٹنگ میں واضح کیا گیا کہ صدر ٹرمپ کے بیانات اُن کے وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن اور وزیر دفاع جیمز میٹس کے اسلام باد میں دیے گئے بیانات سے مطابقت نہیں رکھتے۔

ویڈیو دیکھیے 43:33
Now live
43:33 منٹ

پاکستان کس راہ پر گامزن ہے؟ عمران خان کے ساتھ خصوصی انٹرويو

DW.COM

Audios and videos on the topic

اشتہار