’نیٹ فلِکس نے خودکشی کا سین ہٹا دیا‘ | معاشرہ | DW | 16.07.2019
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

معاشرہ

’نیٹ فلِکس نے خودکشی کا سین ہٹا دیا‘

فلم اور ٹی وی سیریز پلیٹ فارم نیٹ فلِکس نے اپنے ہاں نوجوانوں میں مقبول ڈرامہ سیریز ‘‘13 Reasons why’’ سے خودکشی کا سین مٹا دیا ہے۔ اس اقدام کا مشورہ طبی ماہرین کی جانب سے دیا گیا تھا۔

کمپنی نے اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں کہا ہے کہ طبی ماہرین کی جانب سے موصول ہونے والے ایک مشورے میں نیٹ فلِکس سے کہا گیا تھا کہ نوجوانوں میں مقبول اس ڈرامہ سیریز میں ایسے منظر کی موجودگی خودکشی کی حوصلہ افزائی کا باعث بن سکتی ہے۔

مارینا گلبہاری، شہرت کی بلندیوں سے گمنامی کی زندگی تک

 ہارمونزکا دماغی صحت سے کیا تعلق ہے؟

ڈرامہ سیریز 'تھرٹین ریزنز وائے‘ یا کیوں کی تیرہ وجوہات کے پہلے سیزن کی آخری قسط میں ڈرامے کی اہم کردار ہانا کا نہانے والے ٹب میں اپنی کلائی  کی شریان کاٹ کر خودکشی کر لینے کا سین تھا۔

نیٹ فلِکس کی جانب سے اس معاملے پر مزید تبصرہ نہیں کیا گیا ہے۔ تاہم منگل 16 جولائی کو اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں اس کمپنی کا کہنا تھا کہ طب سے تعلق رکھنے والے ماہرین کے مشورے کے تناظر میں نیٹ فلِکس نے اس ڈرامہ سیریز کے خالق برائن یورکی اور پروڈیوسرز کے ساتھ بات چیت کے بعد ہانا کی خودکشی کا منظر مٹا دینے کا فیصلہ کیا۔

یہ بات اہم ہے کہ اس ڈرامہ سیریز میں اس منظر پر متعدد طبقات کی جانب سے تنقید کی گئی تھی۔ ناقدین الزام عائد کر رہے ہیں کہ اس ڈرامہ سیریز میں خودکشی کو کسی 'اچھے اقدام‘ کی طرح دکھایا گیا ہے۔ تاہم نیٹ فلِکس کے اس اعلان کے بعد مختلف گروپس کی جانب سے اس پیش رفت کا خیرمقدم کیا گیا ہے۔

ایک حالیہ مطالعاتی رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ امریکا میں نیٹ فلِکس پر نوجوانوں کے لیے مختلف ڈرامہ سیریز کے آغاز کے بعد سے نوجوانوں میں خودکشی کے رجحان میں اضافہ دیکھا گیا تھا۔ امریکا کے نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ہیلتھ کی جانب سے بھی اس مطالعاتی رپورٹ سے اتفاق کرتے ہوئے کہا گیا کہ دس سے سترہ برس کی عمر کے بچوں میں اپریل 2017 سے خودکشی کے رجحان میں اضافہ ہوا۔

ع ت، الف الف (روئٹرز، اے پی)

DW.COM