نواز شریف کی پیرول پر رہائی، مدت بڑھا دی گئی | حالات حاضرہ | DW | 12.09.2018
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

نواز شریف کی پیرول پر رہائی، مدت بڑھا دی گئی

نواز شریف، ان کی صاحب زادی مریم نواز اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر کو پیرول پر رہا کر دیا گیا ہے۔ مقامی میڈیا کی رپورٹوں کی مطابق ابتدائی طور پر بارہ گھنٹے کی رہائی کے بعد پیرول کی مدت میں تین روزہ توسیع کی گئی ہے۔

پاکستانی صوبہ پنجاب کے وزیر اعلیٰ عثمان بزدار کے مطابق اگر کلثوم نواز کی تدفین میں کسی وجہ سے تاخیر ہوئی تو رہائی میں مزید توسیع بھی کی جا سکتی ہے۔ انہوں نے ایسی رپورٹوں کی بھی تردید کی کہ جاتی عمرہ کو سب جیل قرار دیا گیا ہے۔ پنجاب حکومت کے مطابق تینوں افراد کو پیرول پر رہائی کے قوانین کے مطابق عارضی رہائی دی گئی ہے۔

کلثوم نواز کی تدفین

دوسری جانب شہباز شریف لندن روانہ ہو گئے ہیں۔ پاکستان کی سابق خاتون اول کلثوم نواز کی لندن میں نماز جنازہ جمعرات کے روز ادا کی جائے گی جس کے بعد ان کی میت پاکستان روانہ کر دی جائے گی۔

اب تک کی اطلاعات کے مطابق نواز شریف کی اہلیہ کی میت جمعے کی صبح لاہور پہنچے گی اور اسی روز ان کی نماز جنازہ ادا کیے جانے کے بعد تدفین کر دی جائے گی۔

نواز شریف کی طبیعت ناساز

سابق پاکستانی وزیر اعظم محمد نواز شریف کو ان کی بیٹی اور داماد سمیت منگل کی شب پیرول پر رہائی دی گئی تھی جس کے بعد انہیں خصوصی طیارے کے ذریعے لاہور پہنچا دیا گیا تھا۔

مقامی میڈیا کے مطابق نواز شریف طبیعت خراب ہونے کے باعث جاتی عمرہ میں پاکستان مسلم لیگ کے کارکنوں اور تعزیت کے لیے آنے والے افراد سے ملاقات نہیں کر رہے۔

DW.COM

اشتہار