1. مواد پر جائیں
  2. مینیو پر جائیں
  3. ڈی ڈبلیو کی مزید سائٹس دیکھیں
سیاستشمالی امریکہ

میکسیکو انتخابات: شین بام ملک کی پہلی خاتون صدر ہوں گی

3 جون 2024

انتخابی نتائج کے تازہ رجحانات کے مطابق کلاڈیا شین بام اپنی تاریخی جیت کے ساتھ میکسیکو کی پہلی خاتون صدر بننے والی ہیں۔ اتوار کے روز ہونے والے انتخابات میں انہیں 56 فیصد ووٹ حاصل کرنے کا غالب امکان ہے۔

https://p.dw.com/p/4gZ34
حکمراں جماعت کی رہنما کلاڈيا شین بام
میکسیکو سٹی کی 61 سالہ سابق میئر کلاڈیا شین بام کو صدارتی انتخابات میں پچاس فیصد سے زیادہ ووٹ ملنے کا غالب امکان ہے، اس لیے وہ ملک کی پہلی خاتون صدر بن سکتی ہیںتصویر: Eduardo Verdugo/AP Photo/picture alliance

میکسیکو میں اتوار کے روز ہونے والے پارلیمانی اور صدارتی انتخابات کے ایگزٹ پول کے مطابق میکسیکو سٹی کی 61 سالہ سابق میئر کلاڈیا شین بام کو صدارتی انتخابات میں پچاس فیصد سے زیادہ ووٹ ملنے کا غالب امکان ہے، اس لیے وہ ملک کی پہلی خاتون صدر بن سکتی ہیں۔

شین بام کی مد مقابل امیدوار ایک کاروباری خاتون زوشل گلویز ہیں اور ابتدائی نتائج کے مطابق شین بام کو اپنے حریف پر واضح برتری حاصل ہو چکی ہے۔

اگر تازہ رجحانات درست ثابت ہوئے تو محترمہ شین بام یکم اکتوبر کو اپنے سرپرست، سبکدوش ہونے والے صدر آندریس مینوئل لوپیز اوبراڈور، کی جگہ لیں گی۔

ایک پول اندازے کے مطابق 61 سالہ سیاست دان نے مجموعی طور پر تقریباً 58 فیصد ووٹ حاصل کیے ہیں۔ جبکہ ان کی حریف گلویز کو تقریبا 26 فیصد ووٹ حاصل ہوئ‏ے ہیں۔ سرکاری طور پر حتمی نتائج آج شام تک آنے کی توقع ہے۔

اتوار کے روز ہونے والے انتخابات کے دوران پولنگ مراکز پر تشدد میں دو افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ پارلیمانی انتخابی مہم کے دوران پہلے ہی 38 امیدواروں کو قتل کیا جا چکا تھا۔

حکمراں جماعت کی رہنما کلاڈيا شین بام
شین بام نے وعدہ کیا ہے کہ وہ سبکدوش ہونے والے مقبول صدر ایندریس مینوئل لوپیز اوبراڈور کے مقبول سیاسی پروگرام کو آگے بھی جاری رکھیں گیتصویر: Fernando Llano/AP Photo/picture alliance

تاریخی ووٹ

صدارتی انتخابات میں ملک کی پہلی خاتون صدر کے تاریخی انتخاب کا امکان پہلے سے ہی بہت زیادہ تھا، کیونکہ اصل مقابلہ دو خواتین سیاستدانوں کے درمیان ہی تھا، جبکہ ایک مرد امیدوار تیسرے نمبر پر ہیں۔

شین بام نے وعدہ کیا ہے کہ وہ سبکدوش ہونے والے مقبول صدر ایندریس مینوئل لوپیز اوبراڈور کے مقبول سیاسی پروگرام کو آگے بھی جاری رکھیں گی۔ واضح رہے کہ سبکدوش ہونے والے صدر آئینی طور پر ایک اور مدت صدارت کے لیے انتخاب نہیں لڑ سکتے۔

مد مخالف امید وار گالویز سابق سینیٹر اور ٹیکنالوجی شعبے کی ایک معروف کاروباری شخصیت ہیں، جو حزب اختلاف کی جماعتوں کے اتحاد کی نمائندگی کرتی ہیں۔ انہوں نے وعدہ کیا تھا کہ وہ صدر لوپیز اوبراڈور کی پالیسیوں کو تبدیل کر دیں گی۔

حکمراں پارٹی اقتدار پر گرفت مزید مضبوط کر سکتی ہے

میکسیکو کی حکمران جماعت 'مورینا پارٹی' ملک کی 32 ریاستوں میں 23 میں پہلے سے ہی اقتدار میں ہے اور پارلیمان بھی اسے سادہ اکثریت حاصل ہے۔ پارٹی کو امید ہے کہ وہ اس بار آئین میں ترمیم کے لیے دونوں ایوانوں میں دو تہائی اکثریت حاصل کر لے گی۔

 ص ز/ ج ا (اے ایف پی، اے پی)