فیس بک پر توہين مذہب پر مبنی مواد، اسلام آباد میں احتجاج | حالات حاضرہ | DW | 08.03.2017
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

فیس بک پر توہين مذہب پر مبنی مواد، اسلام آباد میں احتجاج

اسلام آباد ميں مختلف دينی مدارس سے تعلق رکھنے والے سينکڑوں طلباء نے ايک ريلی نکالی۔ ان طلباء کا مطالبہ تھا کہ سوشل ميڈيا پر توہين مذہب کے زُمرے ميں آنے والا مواد پوسٹ کرنے والے افراد کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔

خبر رساں ادارے ايسوسی ايٹڈ پريس کی پاکستانی دارالحکومت اسلام آباد سے بدھ آٹھ مارچ کو موصولہ رپورٹوں کے مطابق دو ہزار سے زائد طلباء نے يہ ريلی نکالی۔ ان طلباء کا تعلق مختلف دينی مدارس سے تھا۔ ريلی کے شرکاء کا مطالبہ تھا کہ ان افراد کے خلاف سخت سے سخت ترین کارروائی کی جائے، جو سوشل ميڈيا پر متنازعہ اور توہين مذہب پر مبنی مواد شائع کرتے ہيں۔

يہ ريلی ايک ايسے وقت نکالی گئی جب کچھ ہی دير قبل اسلام آباد ہائی کورٹ نے ايک مسلم مبلغ کی دائر کردہ پيٹيشن پر فيصلہ سناتے ہوئے يہ احکامات جاری کيے کہ حکومت توہين مذہب پر مبنی مواد پوسٹ کرنے والوں کے ملک سے باہر جانے پر پابندی عائد کرے۔

توہين مذہب پاکستان ميں ايک بڑا نازک معاملہ تصور کيا جاتا ہے اور عدالت ميں جرم ثابت ہو جانے پر مجرم کو سزائے موت بھی دی جا سکتی ہے۔

DW.COM

ملتے جلتے مندرجات

اشتہار