فان گوخ کے نئے فن پارے کی رونمائی | فن و ثقافت | DW | 17.09.2021
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

فن و ثقافت

فان گوخ کے نئے فن پارے کی رونمائی

مشہور ڈچ مصور فان گوخ کی ایک نئی تصویر کی نقاب کشائی ایمسٹرڈم میں کی گئی ہے۔ اگلے برس جنوری میں اس فن پارے کو اس کے اصل مالک کو لوٹا دیا جائے گا۔ اس کی نمائش کو آرٹ کے شائقین کے لیے ایک شاندار موقع قرار دیا گیا ہے۔

ڈچ پینٹر ونسینٹ  گوخ کے نام سے وابستہ میوزیم ہالینڈ کے شہر ایمسٹرڈیم میں ہے۔ اس کے سینیئر ریسرچر ٹیئو میڈنڈراپ کا کہنا ہے کہ اس تصویر کو دیکھنا ایک شاندار امر ہے۔ اس تصویر کا نام 'اسٹدی فار وورن آؤٹ‘ ہے اور یہ میوزیم کی ملکیت ایک اور ڈرائنگ سے ملتی جلتی ہے۔ اس تصویر میں مصور نے ایک بہتر سالہ بوڑھے ژاکوبُس زودرلانڈ کو دکھایا ہے، جو بڑھاپے میں بھی مزدوری کر رہا ہے۔

کروڑوں یورو مالیت کی دو پینٹنگز چرانے والا مشتبہ چور گرفتار

اسکیچز بارے ابتدائی معلومات

 فان گوخ نے سن 1882 میں اپنے بھائی تھیو کو لکھے  گئے ایک خط میں اسکیچز  بنانے کا ذکر کیا تھا۔ ڈچ مصور نے اپنے بھائی کو تحریر کیا کہ ایک بوڑھے شخص کو محنت مزدوری کرتے دیکھنے کا ایک عمدہ موقع ملا۔ اس بوڑھے شخص کے اون سے بُنے ہوئے لباس میں پیوند لگے تھے اور اس کا سر پر بال نہیں تھے۔

Niederlande Kunst l Van Gogh - Studie für Worn Out

فان گوخ کا اسکیچ اگلے برس دو جنوری تک میوزیم میں نمائش کے لیے رکھا گیا ہے

مبصرین کے مطابق انتیس برس کی عمر میں فان گوخ امکانی طور پر اپنی ڈرائنگ کی صلاحیت کو بہتر بنانے کی کوشش میں تھے اور انسانی اشکال کو مناسب انداز دینے کی بھی کاوش کر رہے تھے۔

ڈرائنگ کی منتقلی نسل در نسل

یہ ایک حقیقت ہے کہ فان گوخ کی مصورانہ صلاحیتوں کا اعتراف ان کی زندگی میں نہیں ہو سکا تھا۔ ان کو ایک عہد ساز مصور کا درجہ مرنے کے بعد ملا۔ انہیں انیسویں صدی کی مصوارنہ تحریک 'امپریشنزم‘ یا تاثر انگیزی کا ایک اہم نمائندہ بھی قرار دیا گیا۔

کورونا کے باعث بند ڈچ میوزیم سے چھ ملین یورو کی پینٹنگ چوری

فان گوخ کی تصویر 'سٹدی فار وورن آؤٹ‘ برسوں ایک ڈچ شہری ہینک بریمیر کی ذاتی کولیکشن کا حصہ رہی ہے۔ ہینک بریمیر کو فان گوخ کی تصاویر جمع کرنے والا سمجھا جاتا تھا۔ انہوں نے یہ ڈرائنگ ایک دوسرے ولندیزی خاندان کو سن 1910 میں بیچ دی۔

WS | Kanada Vincent Van Gogh Ausstellung Toronto

فان گوخ انیسویں صدی کے نامی گرامی امپریشنسٹ مصور قرار دیے جاتے ہیں

 یہ تصویر اس نئے خاندان کے پاس دہائیوں رہی۔ اس کے مالک نے اپنا نام ظاہر کرنے کی اجازت نہیں دی ہے۔ اس ڈرائنگ کے مالک نے گزشتہ برس میوزیم سے رابطہ اُس وقت کیا جب میوزیم نے فان گوخ کی تصاویر کی نجی کولیکشن بارے معلومات فراہم کرنے کی درخواست کی تھی۔

ایک حیران کن اسکیچ

میوزیم کے ماہرین نے تصدیق کی ہے کہ 'سٹدی فار وورن آؤٹ‘ کے لیے وہی پینسل یا اس اسکیچ کو بنانے کے لیے وہی شہ استعمال کی گئی جو اس دور میں مستعمل تھی اور فان گوخ بھی ان کا استعمال کرتے تھے۔

ٹرمپ نے فان گوخ کی پینٹنگ مانگی، جواب ملا ’ٹائلٹ لے لو‘

آرٹ ماہرین نے اس اسکیچ کو حیران کن قرار دیا ہے اور اس کی دریافت کو میوزیم اور شائقین کی خوش قسمتی سے بھی تعبیر کیا۔ یہ تصویر عارضی طور پر فان گوخ میوزیم ایمسٹرڈیم میں اگلے برس دو جنوری تک عام نمائش کے لیے رکھی گئی ہے اور اس کے بعد یہ واپس اس کے اصل مالک کو لوٹا دی جائے گی۔

ع ح/ع ب (اے ایف پی، روئٹرز، اے پی)