’غزہ بحران پر اسرائیلی اور مصری رہنماؤں نے گفتگو کی‘ | حالات حاضرہ | DW | 14.08.2018
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

حالات حاضرہ

’غزہ بحران پر اسرائیلی اور مصری رہنماؤں نے گفتگو کی‘

اسرائیلی وزیر خزانہ موشے کالون نے تصدیق کر دی ہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو نے مئی میں مصری صدر عبدالفتاح السیسی سے ملاقات میں غزہ پٹی میں طویل المدتی جنگ بندی معاہدے کی خاطر مذاکرات کیے تھے۔

خبر رساں ادارے روئٹرز نے اسرائیلی وزیر خزانہ موشے کالون کے حوالے سے چودہ اگست بروز منگل بتایا کہ اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو نے مئی میں اپنے دورہ مصر کے دوران صدر السیسی سے ملاقات میں غزہ پٹی میں سیز فائر پر بھی گفتگو کی تھی۔ یہ پیشرفت ایک ایسے وقت میں ہوئی ہے، جب اسرائیل سے متصل غزہ پٹی کی سرحد پر کشیدگی بڑھتی جا ری ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس موقع پر دونوں رہنماؤں نے طویل المدتی فائر بندی کے علاوہ حماس کے زیر قبضہ اس علاقے میں پائیدار امن اور ممکنہ ترقیاتی منصوبوں پر بھی تبادلہ خیال کیا تھا۔

پیر کے دن جب ان رہنماؤں کی خبریں عام ہوئی تھیں تو اسرائیلی وزیراعظم کے ترجمان نے ان کی تردید یا تصدیق کرنے سے انکار کر دیا تھا۔ حالیہ مہینوں میں غزہ پٹی میں مقیم فلسطینوں کی طرف سے پرتشدد احتجاج کے سلسلے کے بعد امریکا اور مصر نے کوشش شروع کر دی ہے کہ دونوں فریق ایک طویل المدتی جنگ بندی ڈیل پر رضا مند ہو جائیں۔ اس مقصد کی خاطر امریکا اور مصر ثالثی کا کردار ادا کر رہے ہیں۔

پیر کے دن اسرائیلی میڈیا میں جاری ہونے والی رپورٹوں کے مطابق اسرائیلی وزیر اعظم نے مصری صدر سے ملاقات میں غزہ پٹی کی ناکہ بندی میں نرمی، بنیادی شہری ڈھانچے کی تعمیر نو اور فائر بندی کی شرائط پر گفتگو کی تھی۔

اسرائیلی آرمی ریڈیو میں ایک پروگرام میں شرکت کے دوران کالون نے کہا کہ نیتن یاہو اور السیسی نے ملاقات کی تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ غزہ پٹی میں جو کچھ بھی کیا جائے گا، وہ مصر کی ثالثی اور تعاون کے ساتھ ہی کیا جائے گا۔

غزہ پٹی میں دو ملین سے زائد فلسطینی آباد ہیں، جو اسرائیلی اور مصری ناکہ بندی کی وجہ سے متعدد مشکلات کا شکار ہیں۔ عالمی بینک کے مطابق اس فلسطینی علاقے میں پینے کے صاف پانی اور ادویات کی قلت کے علاوہ بجلی کی فراہمی میں بھی شدید مسائل ہیں، جس کی وجہ سے غزہ پٹی کے باسی ایک بحرانی حالت کا سامنا کر رہے ہیں۔ اسرائیل اور مصر کا کہنا ہے کہ غزہ پٹی کی ناکہ بندی سکیورٹی تحفظات کی وجہ سے کی گئی ہے۔

ع ب / ع ت / خبر رساں ادارے

DW.COM

ملتے جلتے مندرجات