′عمران خان نے سکھوں کے دل جیت لیے ‘ | معاشرہ | DW | 12.11.2019
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

معاشرہ

'عمران خان نے سکھوں کے دل جیت لیے ‘

کئی سکھ تنظیموں نے مطالبہ کیا ہے کہ پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کو کرتارپور راہ داری کھولنے اور سکھ برادری کو بغیر ویزا کے گرو نانک کے گردوارے کا دورہ کرنے کی اجازت دیے جانے پر نوبل امن انعام دیا جائے۔

دنیا بھر میں سکھ برادری کرتارپور میں اپنے مذہبی پیشوا گرو نانک کے گردوارے کی زیارت کرنے کی شدید خواہش رکھتی تھی۔ اب جب پاکستان کی جانب سے کرتارپور راہ داری کھول دی گئی ہے، دنیا بھر سے سکھ یاتری اس گردوارے کا دورہ کر رہے ہیں۔ ایسے میں خالستان تحریک کی تنظیم ’جسٹس فار سکھ‘ سمیت کئی سکھ تنظیموں کی جانب سے پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کو نوبل امن انعام دیے جانے کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔

ویڈیو دیکھیے 00:52

’عمران خان کے لیے دعا گو ہیں‘

پاکستان دورے پر آئے کئی سکھ یاتریوں کا یہ  بھی کہنا ہے کہ عمران خان کی جانب سے کرتارپور راہ داری کے کھولے جانے اور سکھوں کو بغیر ویزا کے گرو ناناک کی 550 ویں سالگرہ کے موقع پر گردوارے آنے کی اجازت دینا ایک تاریخی فیصلہ ہے۔ ڈی ڈبلیو سے گفتگو کرتے ہوئے گردوارہ جنم استھان کے سربراہ  بلونت سنگھ گرانتی کا کہنا تھا،'' پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے ایک انوکھا کام کیا ہے جس نے دنیا بھر میں سکھوں کے دل جیت لیے ہیں۔ ہم عمران خان کی عمر اورصحت اور کامیابی کے لیے دعا کرتے ہیں۔ انہوں نے پاکستان کا نام اونچا کیا ہے۔ وہ کام جو دس یا پانچ سال  میں ہونا تھا وہ کام انہوں نے ایک سال میں کر دکھایا۔‘‘

کئی سکھ یاتریوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ  تمام عمر گرو نانک کے گردوارے  میں عبادت کرنے کی خواہش کرتے رہے ہیں اور بالآخر ان کی خواہش پوری ہو گئی ہیں۔ سکھوں کی کئی تنظیموں کی جانب سے کہا گیا ہے کہ وہ نوبل کمیٹی کو خط تحریر کریں گے اور عمران خان کو نوبل امن انعام دیے جانے کی سفارش کریں گے۔

ب ج، ا ا 

ویڈیو دیکھیے 04:19

بھارتی سکھ یاتریوں کی پاکستان آمد کا سلسلہ جاری