سید احمد گیلانی کے بعد حریت کانفرنس کہاں جائے گی؟ | ڈی ڈبلیو ویڈیو | DW | 03.07.2020
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

ڈی ڈبلیو ویڈیو

سید احمد گیلانی کے بعد حریت کانفرنس کہاں جائے گی؟

بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں حریت کانفرنس کے سنیئر ترین رہنما سید احمد گیلانی کی طرف سے اچانک اس علیحدگی پسند تنظیم کی سربراہی سے الگ ہونے پر مختلف قیاس آرائیاں جاری ہیں اور اس تحریک کے مستقبل کے بارے میں بھی سوالات اٹھ رہے ہیں۔

ویڈیو دیکھیے 03:02

حریت کانفرنس کے بیشتر رہنما گزشتہ تقریبا گيارہ ماہ سے قید میں ہیں اور خطے میں سخت ترین پابندیوں اور بندشوں کے سبب ان کی سرگرمیاں محدود ہو کر رہ گئی ہیں۔ ان نازک حالات میں تنظیم کے ایک سرکردہ رہنما سید احمد گيلانی نے اپنی تنظیم کے چیئرمین کے عہدے سے مستعفی ہونے کا اعلان کیا ہے، جس سے علیحدگی پسندی کی تحریک کو شدید دھچکا لگا ہے۔ 
کشمیر کے معروف علیحدگی پسند رہنما میر وا‏عظ مولوی عمر فاروق  کے معمتد خاص اور حریت کانفرنس کے سرگرم رکن سید شمش رحمان نے ان تمام موضوعات پر ڈی ڈبلیو کے نامہ نگار صلاح الدین زین سے سری نگر میں بات چيت کی۔ 
ان کا کہنا تھا کہ بندشوں کے سبب تنظیم مشکل دور سے گزر رہی ہے لیکن کشمیر میں اس کا جو کردار ہے وہ اسے ادا کرتی رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ غالبا عمر یا ناسازی طبیعت کے باعث سید احمد گیلانی تحریک سے الگ ہوئے لیکن سید علی گیلانی نے ایسے اندازوں کو مسترد کر دیا ہے کہ وہ بھارتی حکومت کے دباؤ یا ناسازی طبعیت  کے باعث اس عہدے سے الگ ہوئے ہیں۔
اکانوے سالہ بزرگ سیاستدان کے بقول حریت کانفرنس کی رہنما ان کی ’قیادت کے خلاف بغاوت‘  پر اتر آئے تھے۔ انہوں نے واضح کیا ہے کہ وہ بھارت کے خلاف ’اپنے لوگوں‘ کی قیادت کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔

پڑھیں بھی