سعودی حملہ آور نے فلوریڈا فائرنگ سے قبل قتل عام کی وڈیوز دیکھیں | حالات حاضرہ | DW | 08.12.2019
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

حالات حاضرہ

سعودی حملہ آور نے فلوریڈا فائرنگ سے قبل قتل عام کی وڈیوز دیکھیں

امریکی اڈے پر فائرنگ میں ملوث سعودی فوجی نے حملے سے چند روز قبل رات کے کھانے پر کچھ ساتھیوں کے ہمراہ اندھا دھن فائرنگ کے واقعات کی وڈیوز دیکھی تھیں۔

یہ اطلاعات امریکی نیوز اجنسی اے پی  نے ایک امریکی اہلکار کے حوالے سے بتائی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق حملے کے بعد امریکی ریاست فلوریڈا کے نیول اڈے پر زیر تربیت دس سعودی طلبا کو حراست میں لے لیا گیا جبکہ کئی دیگر لاپتہ ہو گئے۔

حملہ آور سعودی فضائیہ کا افسر تھا اور فلوریڈا کے شہر پینساکولا میں واقع امریکی بحری اڈے  میں زیر تربیت تھا۔ اس نے جمعے کی صبح  اپنی کلاس میں فائرنگ کر کے تین افراد کو ہلاک اور آٹھ دیگر کو زخمی کردیا۔ بعد ازاں پولیس کی جوابی کارروائی میں وہ خود بھی مارا گیا۔

پینساکولا کے نیول ایئر اسٹیشن کے حکام نے بتایا کہ سعودی فوج کا سیکنڈ لیفٹیننٹ محمد شمرانی امریکا میں ہوابازی کی تربیت حاصل کر رہا تھا۔

فائرنگ سے قبل حملہ آور نے سوشل میڈیا ویب سائٹ ٹوئٹر پر امریکی خارجہ پالیسی پر تنقید کی تھی اور اسامہ بن لادن کے بیانات کا حوالہ دیا تھا۔

امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کے مطابق فائرنگ کے بعد چھ دیگر سعودی شہریوں کو حراست میں لے لیا گیا۔ ان میں تین وہ بھی شامل ہیں جو فائرنگ کے اس سارے واقعے کی وڈیو بنا رہے تھے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ وہ سعودی بادشاہ شاہ سلمان سے رابطے میں ہیں اور سعودی حکام اس واقعے کی تفتیش میں تعاون کر رہے ہیں۔