سب سے زيادہ شراب يورپ ميں پی جاتی ہے، ورلڈ ہيلتھ آرگنائزيشن | صحت | DW | 28.03.2012
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

صحت

سب سے زيادہ شراب يورپ ميں پی جاتی ہے، ورلڈ ہيلتھ آرگنائزيشن

يورپی کميشن اور ورلڈ ہيلتھ آرگنائزيشن کے مطابق دنیا کے دیگر ممالک کے مقابلے میں يورپی ممالک کے باشندے سب سے زيادہ شراب نوشی کرتے ہيں۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق يورپی کميشن اور ورلڈ ہيلتھ آرگنائزيشن کی رپورٹ ميں اس بات کا انکشاف کيا گيا ہے کہ يورپ ميں دنيا کے دیگر علاقوں سے زيادہ شراب پی جاتی ہے۔ رپورٹ کے مطابق يورپی ممالک ميں بسنے والے لوگ سالانہ اوسطا 12.5 ليٹر شراب پيتے ہيں۔ البتہ شراب نوشی کی شرح پورے يورپ ميں يکساں نہيں ہے۔

يورپی کميشن اور ورلڈ ہيلتھ آرگنائزيشن کی رپورٹ کے مطابق شراب نوشی ميں مشرقی اور وسطی مشرقی يورپی ممالک سر فہرست ہيں جہان بالغان سالانہ اوسطاٍ 14.5 ليٹر الکوحل پيتے ہيں۔ اس کے علاوہ یہ شرح يورپ کے مغربی اور وسطی مغربی علاقوں ميں 12.4 جبکہ جنوبی يورپ ميں 11.2 ليٹر ہے۔ شمال يورپی ممالک جنہيں Nordic Countries بھی کہا جاتا ہے، ميں سالانہ بنيادوں پر سب سے کم 10.4 ليٹر الکوحول پی جاتی ہے۔

ورلڈ ہيلتھ آرگنائزيشن کے يورپی ممالک کی ڈائريکٹر Zsuzsanna Jakab کا کہنا ہے کہ يورپی ممالک کے اس رجحان کے معاشرے اور اس کے افراد پر براہ راست اثرات مرتب ہوتے ہيں۔

مشرقی يورپی ممالک ميں بالغان سالانہ اوسطاٍ 14.5 ليٹر الکوحل پيتے ہيں

مشرقی يورپی ممالک ميں بالغان سالانہ اوسطاٍ 14.5 ليٹر الکوحل پيتے ہيں

البتہ اگر ان اعداد و شمار کو ورلڈ ہيلتھ آرگنائزيشن کی جانب سے مقرر کردہ ’خطرناک شراب نوشی‘ کے تناظر ميں ديکھا جائے تو ايک مختلف تصوير سامنے آتی ہے۔ رپورٹ کے مطابق کھانے کے وقت سے کافی پہلے يا اس کے کافی بعد شراب پينا، گھروں سے باہر مختلف مقامات پر شراب پينا اور وقت بے وقت شراب پينا ايسی عادتيں ہيں جنہيں خطرناک يا نقصان دہ شراب نوشی کے زمرے ميں شامل کيا جا سکتا ہے۔ اس سلسلے ميں يورپ کے مختلف حصوں کو ايک سے پانج تک کے درجوں ميں تقسيم کيا گيا ہے جہاں ايک نمبر سب سے کم نقصان دہ ہے اور پانچ سب سے زيادہ۔ اس درجہ بندی کے اعتبار سے شمالی يورپی ممالک 2.8 کی خطرناک سطح پر ہيں جبکہ يورپ کے وسط اور مشرق ميں واقع ممالک 2.9 پر ہيں۔ مغربی يورپ ميں يہ سطح 1.5 اور جنوبی يورپ ميں 1.1 ہے۔

يورپی کميشن اور ورلڈ ہيلتھ آرگنائزيشن کی رپورٹ ميں اس بات کا بھی انکشاف کيا گيا ہے کہ قريب چاليس بيمارياں ايسی ہيں جن کی کڑی شراب نوشی سے جا ملتی ہے۔ ورلڈ ہيلتھ آرگنائزيشن کے ايک سابقہ جائزے کے مطابق عالمی طور پر سالانہ 2.5 ملين افراد الکوحول کے غير ذمہ دارانہ استعمال کی وجہ سے اپنی جان سے ہاتھ دھو بيٹھتے ہيں۔

رپورٹ: عاصم سليم

ادارت: کشور مصطفی

اشتہار