رواں برس کینسر کے 18 ملین نئے کیسز، عالمی ادارہ صحت | صحت | DW | 12.09.2018
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

صحت

رواں برس کینسر کے 18 ملین نئے کیسز، عالمی ادارہ صحت

عالمی ادارہ صحت کے کینسر کی تحقیق کے شعبے نے اندازہ ظاہر کیا ہے کہ رواں برس دنیا بھر میں سرطان کے 18 ملین نئے کیسز سامنے آئیں گے۔ جبکہ اس مرض کے سبب نو ملین افراد کی موت واقع ہو سکتی ہے۔

خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن یا عالمی ادارہ صحت کی سرطان پر تحقیق کرنے والے شعبے نے اندازہ ظاہر کیا ہے رواں برس عالمی سطح پر کینسر کے اٹھارہ ملین نئے کیسز سامنے آئیں گے۔ ماہرین کے اندازوں کے مطابق رواں برس اس مہلک بیماری کے سبب ہلاکتوں کی تعداد نو ملین سے زائد رہے گی۔

Logo der Weltgesundheitsorganisation

عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ کے مطابق کینسر کے سبب ہونے والی کُل اموات میں سے نصف صرف بر اعظم ایشیا میں ہوں گی۔

’’انٹرنیشنل ایجنسی فار ریسرچ آن کینسر‘‘ کی طرف سے یہ رپورٹ بدھ 12ستمبر کو شائع کی گئی ہے۔ اس رپورٹ کے مطابق کینسر کے مریضوں میں سے سب سے زیادہ ہلاکتوں کا باعث پھیپھڑوں کا سرطان بنتا ہے۔ دوسرے نمبر پر سب سے زیادہ خواتین میں جان لیوا بریسٹ کینسر کا نمبر آتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق چونکہ پھیپھڑوں کے کینسر کو بڑھنے میں عام طور پر کئی دہائیاں لگ جاتی ہیں اس لیے سگریٹ نوشی میں کمی کے باجود لوگوں میں پھیپھڑوں کے سرطان میں کمی کے اثرات ممکنہ طور پر کئی برس تک دکھائی دینا مشکل ہے۔

عالمی ادارہ صحت کی سرطان پر تحقیق کی ایجنسی کی طرف سے یہ اندازے اُس ڈیٹا کی روشنی میں مرتب کیے گئے ہیں جو د دنیا کے ایک سو پچاسی ممالک سے جمع کیا گیا۔ ان اندازوں کے مطابق ہر پانچ میں سے ایک مرد اور ہر چھ میں سے ایک خاتون کو زندگی میں کینسر ہو سکتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق کینسر کے سبب ہونے والی کُل اموات میں سے نصف صرف بر اعظم ایشیا میں ہوں گی۔ خیال رہے کہ بر اعظم ایشیا میں دنیا کی کُل آبادی کا 60 فیصد آباد ہے۔ 

ویڈیو دیکھیے 04:38
Now live
04:38 منٹ

سرطان کے خلاف طبی ماہرین کو کامیابیاں حاصل

ا ب ا / ص ح (ایسوسی ایٹڈ پریس)

DW.COM

Audios and videos on the topic

اشتہار