دیوار پر چپکا کیلا، ایک لاکھ بیس ہزار ڈالر میں فروخت | فن و ثقافت | DW | 08.12.2019
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

فن و ثقافت

دیوار پر چپکا کیلا، ایک لاکھ بیس ہزار ڈالر میں فروخت

امریکی شہر میامی میں آرٹ نمائش کے دوران ایک فنکار نے بھوک لگنے پر مہنگے ترین فن پارے میں استعمال کیلا کھا کر حاضرین کو حیران کردیا۔

امریکی ریاست فلوریڈا کے میامی بیچ پر منعقدہ 'آرٹ بیزل شو‘  نامی ایک آرٹ نمائش میں  دیوار پر'ٹیپ سے چپکے کیلے‘ کے فن پارے کو ایک اطالوی فنکار موریثیو کاتیلان نے 'کامیڈین ‘ کے عنوان سے تخلیق کیا تھا۔

اس فن پارے کو ایک فرانسیسی  شخص نے $120,000 میں خریدا تھا۔ تاہم نمائش میں شریک ایک فنکار نے یہ مہنگا ترین کیلا  کھا کر حاضرین کو حیران کر دیا۔

ڈیوڈ ڈٹونا نامی اس فنکار نے بعد میں 'ہنگری آرٹسٹ‘ کے نام سے اپنے اس حیران کن عمل کی ویڈیو سوشل میڈیا ویب سائٹ انسٹاگرام پر شائع کردی۔ اس ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ڈیوڈ نے کس طرح چھلکا اتار کر کیلا کھا لیا۔

اطالوی آرٹست کاتیلان کے ترجمان کے مطابق ان کے اس عمل سے فن پارے کو کوئی نقصان نہیں پہنچا کیونکہ فن پارے میں موجودکیلا ایک تخلیقی خیال کی نمائندگی کر رہا تھا۔

میوزیم کے ترجمان کے مطابق ڈٹونا کے کیلا کھانے کے پندرہ منٹ بعد ہی ایک نیا کیلا ٹیپ میں لپیٹ کر دیوار پر چپکا دیا گیا تھا۔

اطلاعات کے مطابق 'کامیڈین‘ نامی اس فن پارے کے مزید دو نمونے ایک لاکھ بیس ہزار ڈالر میں فروخت کیے گئے جبکہ تیسرا کیلا ایک لاکھ پچاس ہزار ڈالر کا فروخت ہوا۔

اطالوی فنکار کاتیلان کی ایک وجہ شہرت امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو  18 کیرٹ سونے کا ٹوائلٹ قرض پر دینے کی پیشکش بھی ہے۔

ع آ / ش ج (AFP, dpa, AP)

DW.COM