بھارت میں کورونا وبا گزشتہ چھ ماہ کی بلند ترین سطح پر | حالات حاضرہ | DW | 03.04.2021
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

حالات حاضرہ

بھارت میں کورونا وبا گزشتہ چھ ماہ کی بلند ترین سطح پر

بھارت کے چند بڑے شہروں میں سخت لاک ڈاؤن کا نفاذ ہفتہ تین اپریل سے کر دیا گیا ہے۔ اس وقت بھارت کو شدید کورونا وبا کا سامنا ہے اور یہ گزشتہ چھ ماہ کی بلند ترین سطح پر بتائی گئی ہے۔

بھارت میں کورونا وبا کی تیسری لہر میں انتہائی شدت پیدا ہو چکی ہے۔ اس کی لپیٹ میں قریب سبھی شہر اور قصبے ہیں۔ خاص طور پر سب سے امیر ریاست مہاراشٹر میں حالات بہت ہی خراب بتائے گئے ہیں۔ مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ نے اپنی عوام کو متنبہ کیا ہے کہ اگر وبا سے انفیکشن کی یہی صور حال رہی تو ساری ریاست میں سخت لاک ڈاؤن کا نفاذ کر دیا جائے گا۔ انہوں نے عوام کو محتاط اور احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایت کی ہے۔

بھارت: کورونا کی صورت حال بد سے بدتر ہوتی ہوئی

مہاراشٹر میں کورونا وبا

بھارت کی مالی طور پر مستحکم ریاست مہاراشٹر میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں کورونا سے متاثر ہونے والے افراد کی تعداد سارے ملک کا نصف رہی ہے۔ بھارتی وزارتِ صحت کے مطابق مہاراشٹر میں نوے ہزار سے زائد افراد کووڈ انیس سے متاثر ہیں۔

Indien Corona-Pandemie | Lepra

بھارت کے کئی مقامات پر غریب اور بزرگ افراد کو وبا کے ایام میں بھی طبی مدد فراہم کی جا رہی ہے

بھارت میں کورونا وبا سے متاثر ہونے والے افراد کی تعداد ایک کروڑ تیس لاکھ کے قریب ہے اور اموات ایک لاکھ چونسٹھ ہزار سے زائد ہیں۔ ریاستی وزیر اعلیٰ نے کہا ہے کہ اگر انفیکشن کی صورت حال یوں ہی رہی تو اسپتالوں میں ہنگامی طور پر طبی امداد کی فراہمی اور انتہائی نگہداشت کا نظام منہدم ہو سکتا ہے۔

کرناٹک کی صورت حال

جنوبی بھارتی ریاست کرناٹک کو ملک میں ٹیکنیکل ترقی کا مرکز قرار دیا جاتا ہے۔ اس کے شہر بنگالورو (بنگلور) کو ڈیجیٹل دنیا کا ایک اہم مقام سمجھا جاتا ہے۔ کرناٹک میں حکومت نے تمام ورزش کے مراکز اور مذہبی مقامات پر تقریبات کے انعقاد کی ممانعت کر دی ہے۔ اسی طرح کورونا وبا کی افزائش کے بعد سینما گھروں، شراب خانوں اور ریستورانوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ محدود افراد کو داخل ہونے کی اجازت دیں۔

نئی انفیکشنز کا ریکارڈ، بھارتی ریاست مہاراشٹر میں رات کا کرفیو نافذ

نئی دہلی میں کورونا وبا

بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کو بھی کورونا وبا نے اپنی گرفت میں لے رکھا ہے۔ گزشتہ ایک دن میں کورونا مریضوں کی تعداد ساڑھے تین ہزار سے کہیں زیادہ بتائی گئی ہے، جو پچھلے ایک سال میں سب سے زیادہ ہے۔

Indien Neu-Delhi | Praveen Goyal spendet Essen für hungrige Menschen

بھارت کے بڑے شہروں میں لوگ ماسک کی پابندی کا احترام کرنے سے گریز کرتے ہیں

نئی دہلی کے وزیر اعلیٰ نے ایک اور لاک ڈاؤن کا امکان رد کر دیا ہے۔ بھارتی دارالحکومت میں مارچ کے اوائل میں وبا سے متاثرہ مریضوں کی تعداد پندرہ ہزار سے زائد تھی لیکن اپریل کے اوائل پر یہ اٹھاسی ہزار کے قریب پہنچ گئی ہے

۔'گائیتری منتر‘سے کورونا کا علاج؟ 

ایک کروڑ سے زائد مریض

بھارت کا شمار امریکا اور برازیل کے ساتھ ہوتا ہے، جہاں کووڈ انیس کے مریضوں کی تعداد دس ملین یعنی ایک کروڑ سے زیادہ ہے۔ امریکا میں ایسے مریضوں کی تعداد تین کروڑ سے متجاوز ہو چکی ہے جبکہ برازیل دوسری پوزیشن پر ہے اور وبا سے متاثرہ افراد دو کروڑ کے قریب ہیں۔ بھارت ایسے مریضوں والا تیسرا ملک ہے۔ کورونا اموات کے اعتبار سے امریکا میں ساڑھے پانچ لاکھ سے زائد، برازیل میں سوا تین لاکھ کے قریب اور بھارت میں  ڈیڑھ لاکھ سے زائد انسان موت کے منہ میں جا چکے ہیں۔

ع ح، ب ج (روئٹرز)