بازوؤں سے محروم بے گھر آرٹسٹ کا سیاح پر قینچی سے حملہ | معاشرہ | DW | 12.07.2018
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

بازوؤں سے محروم بے گھر آرٹسٹ کا سیاح پر قینچی سے حملہ

امریکی ریاست فلوریڈا میں ایک بے گھر آرٹسٹ کو گرفتار کر لیا گیا ہے، جو دونوں بازوؤں سے محروم ہے لیکن جس نے ایک سیاح پر قینچی سے حملہ کر دیا تھا۔ ملزم اس سیاح پر دو بار وار کرنے کے بعد موقع واردات سے فرار بھی ہو گیا تھا۔

نیوز ایجنسی روئٹرز کی جمعرات بارہ جولائی کو میامی سے ملنے والی رپورٹوں کے مطابق اس بے گھر امریکی شہری کی عمر 46 برس ہے اور اسے ریاست فلوریڈا میں میامی بِیچ نامی کاؤنٹی سے اس لیے گرفتار کر لیا گیا کہ اس نے ایک شخص کو قینچی سے حملہ کر کے زخمی کر دیا تھا۔

ملزم کا نام جوناتھن کرَین شا ہے، جو ریاست فلوریڈا ہی کا رہائشی ہے۔ اس نے جس امریکی شہری کو ایک قینچی سے دو وار کر کے زخمی کر دیا، وہ شکاگو کا رہائشی بتایا گیا ہے، جو فلوریڈا کی سیاحت کے لیے میامی بِیچ آیا ہوا تھا۔ پولیس نے بتایا کہ ملزم نے اپنے بازو نہ ہونے کی وجہ سے اس 22 سالہ مقامی سیاح پر حملہ اس طرح کیا کہ اس نے ایک تیز دھار قینچی اپنے ایک پاؤں سے پکڑی ہوئی تھی۔ پولیس کو زخمی سیاح اس حالت میں ملا تھا کہ اس کے ایک بازو سے خون بہہ رہا تھا۔ اسے فوری طور پر ہسپتال پہنچا دیا گیا تھا۔

یہ واقعہ منگل دس جولائی کو رات گئے پیش آیا اور میامی بِیچ پولیس ڈیپارٹمنٹ کے مطابق کَرینشا کو، جو موقع واردات سے فرار ہو گیا تھا، اگلے روز گرفتار کر لیا گیا۔ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ ملزم کرَینشا، جو بے گھر ہے اور رات کے وقت کسی نہ کسی پارک یا پل کے نیچے سو جاتا ہے، ایک خود ساختہ آرٹسٹ بھی ہے۔

پولیس کے مطابق میامی بِیچ کاؤنٹی کے علاقے ساؤتھ بَیچ میں باقاعدگی سے دکھائی دینے والے انسانی کرداروں میں سے جوناتھن کَرینشا ایک ایسا کردار ہے، جو ہر کسی کو کہیں نہ کہیں نظر آ ہی جاتا ہے۔

یہ آرٹسٹ گزشتہ کئی برسوں سے بے گھر ہے اور عام طور پر ساؤتھ بِیچ کے علاقے میں لنکن مال روڈ پر بیٹھا کینوس پر تصویریں بناتا رہتا ہے۔ وہ یہ تصویریں بھی اپنے پیروں سے بناتا ہے اور وہاں سے گزرنے والے سیاح اسے دیکھ کر نہ صرف اس کے ہنر کی داد دیتے ہیں بلکہ اسے کچھ نہ کچھ رقم بھی دے دیتے ہیں۔

پولیس نے بتایا کہ خیرات کے طور پر ملنے والی یہی رقم اس ملزم کی واحد آمدنی ہوتی تھی، جس سے وہ اپنی گزر بسر کر لیتا تھا۔ اب لیکن وہ پولیس کی حراست میں ہے اور یہ بات واضح نہیں کہ اس نے دس اور گیارہ جولائی کی درمیانی رات شکاگو سے آنے والے 22 سالہ سیاح پر حملہ کیوں کیا تھا۔

م م / ش ح / روئٹرز

DW.COM

اشتہار