بارہ ہزار سال پرانا ماموت کا ڈھانچہ نیلام | سائنس اور ماحول | DW | 17.12.2017
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

بارہ ہزار سال پرانا ماموت کا ڈھانچہ نیلام

فرانس میں تقریباﹰ بارہ ہزار سال پرانا، ہاتھیوں کی طرح کے لیکن معدوم ہو چکے ماموتوں کی نسل کے ایک اونی جانور کا بہت بڑا ڈھانچہ قریب ساڑھے پانچ لاکھ یورو میں نیلام کر دیا گیا۔ ماموت کا یہ ڈھانچہ سائبریا سے ملا تھا۔

فرانسیسی دارالحکومت  پیرس سے اتوار سترہ دسمبر کو ملنے والی نیوز ایجنسی ڈی پی اے کی رپورٹوں کے مطابق اس حیوانی ڈھانچے کی نیلامی ہفتہ سولہ دسمبر کو فرانسیسی شہر لیوں میں کی گئی اور اسے  پانچ لاکھ اڑتالیس ہزار یورو سے زائد یا قریب چھ لاکھ پینتالیس ہزار امریکی ڈالر کے عوض فروخت کیا گیا۔

’برفانی انسان‘ دراصل ریچھ کی ایک قسم ہے، تحقیق

برطانیہ میں بغیر ڈرائیور کے چلنے والی روبوٹ گاڑیوں کا آغاز

لیوں میں ’آگُوٹ‘ نامی نیلام گھر کے مطابق یہ انسانی تاریخ میں کسی نجی خریدار کی ملکیت میں چلا جانے والا کسی بھی ماموت کا سب سے بڑا ڈھانچہ ہے۔ اسے ایک ایسی فرانسیسی کاروباری شخصیت نے خریدا، جس کی کمپنی کا لوگو بھی ایک ماموت کی شبیہ پر مشتمل ہے۔

متعلقہ فرانسیسی نیلام گھر کے ایک ترجمان نے بتایا کہ اونی ماموت کا یہ ڈھانچہ 3.4 میٹر بلند ہے اور اسے ایسے جوڑا گیا ہے کہ جیسے یہ عظیم الجثہ ماموت، جسے عرف عام میں فیل پیکر یا فیل قامت بھی کہتے ہیں، چلتے چلتے اچانک رک گیا ہو۔

اس ڈھانچے کو پیئر ایتیئن بِنشیڈلر (Pierre-Etienne Binschedler) نامی ایک فرانسیسی شہری نے خریدا، جو مختلف اشیاء کو واٹر پروف بنانے والے مادے تیار کرنے والی ایک کمپنی سوپریما (Soprema) کے مالک ہیں۔ فرانسیسی شہر اسٹراسبرگ کے نواح میں قائم اس کمپنی کے مالک نے اس فیل پیکر کے ڈھانچے کو خریدنے کے بعد کہا، ’’ہم اسے اپنی کمپنی کے صدر دروازے کے قریب ایک ہال میں اسی طرح رکھیں گے، جیسے یہ یہاں کھڑا ہوا ہے۔ ہمارے پاس اس کے لیے کافی جگہ ہے۔‘‘

ویڈیو دیکھیے 03:20
Now live
03:20 منٹ

ہزاروں سال پہلے انسان نے افریقہ سے یورپ ہجرت کیوں کی؟

قدیم حیوانی حیاتیات کے ماہرین کے مطابق یہ ڈھانچہ ایک ایسے اونی ماموت کا ہے، جو نسلی طور پر ہاتھیوں کا رشتہ دار تھا اور دیکھنے میں بھی کافی حد تک ہاتھی جیسا ہی نظر آتا تھا۔ اس طرح کے ماموت (mammoth) یا فیل قامت دنیا کے زیادہ تر علاقوں سے کم از کم بھی دس ہزار سال پہلے ناپید ہو گئے تھے۔

تب ایسے عظیم القامت جانور صرف سائبریا یا الاسکا جیسے دور دراز یا غیر آباد علاقوں میں مزید کچھ عرصے تک زندہ رہے تھے۔ پھر وہاں بھی ان کی نسل معدوم ہو گئی تھی۔ ماموت کے جس ڈھانچے کو لیوں میں نیلام کیا گیا، وہ سائبیریا سے ہی ملا تھا۔ اس حیوانی ڈھانچے کی اونچائی 3.4 میٹر اور لمبائی 5.3 میٹر ہے۔ اس ماموت کے دونوں بہت بڑے بڑے دانت اور 80 فیصد ہڈیاں ابھی تک اپنی اصلی حالت میں ہیں۔

سائنسدانوں کے مطابق ماموت کا یہ ڈھانچہ زمین پر زندگی کے اس دور کا ہے، جو 11,700 برس قبل ختم ہو گیا تھا۔ اس دور میں اس اور دیگر نسلوں کے ماموت ناپید ہو رہے تھے اور کرہء ارض کے مختلف حصوں میں جدید دور کے انسان (Homo Sapien) کا پھیلاؤ شروع ہو چکا تھا۔

فرانس کے اس نیلام گھر نے اسی مہینے ہزارہا سال پہلے معدوم ہو چکے ایک ڈائنوسار کا بہت بڑا اصلی ڈھانچہ بھی نیلام کیا تھا، جو قریب 1.13 ملین یورو میں فروخت کیا گیا تھا۔

ویڈیو دیکھیے 04:50
Now live
04:50 منٹ

کیا بادل موسمیاتی تبدیلیوں میں کوئی کردار ادا کرتے ہیں

DW.COM

Audios and videos on the topic

اشتہار