انٹرپول کے چھاپے، انیس ہزار قیمتی نوادرات برآمد | فن و ثقافت | DW | 07.05.2020
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

فن و ثقافت

انٹرپول کے چھاپے، انیس ہزار قیمتی نوادرات برآمد

انٹرپول نے ایک سو سے زائد ممالک میں چھاپوں کے دوران جنگ زدہ ممالک کے عجائب گھروں اور آثار قدیمہ سے چوری کیے گئے انیس ہزار فن پارے اور نوادرات برآمد کیے ہیں۔

فرانسیسی شہر لیون میں واقع انٹرپول یا بین الاقوامی پولیس آرگنائزیشن کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ قیمتی فن پاروں اور قدیم نوادرات کی غیر قانونی تجارت کے خلاف ایک سو تین ممالک میں منظم چھاپوں کے دوران 19000 چوری شدہ فن پارے بازیاب کرا لیے گئے۔

مزید پڑھیے:فرانس نے اسمگل شدہ قیمتی نوادرات پاکستان کو واپس کر دیے
انٹرپول نے ان کارروائیوں میں ایک سو ایک مشتبہ افراد کو گرفتار کیا اور مجموعی طور پر تین سو مقدمات میں تفتیش شروع کر دی ہے۔ ان چھاپوں کا مقصد غیر قانونی طور پر آرٹ اور قدیمی نوادرات فروخت کرنے والوں کے بین الاقوامی نیٹ ورک کو توڑنا ہے۔


انٹرپول کے ان چھاپوں میں کابل ایئرپورٹ پر افغان کسٹمز نے 971 نوادرات اور فن پارے ضبط کر لیے جو کہ استنبول منتقل کیے جا رہے تھے۔ 
ادھر ہسپانوی پولیس نے میڈرڈ کے ہوائی اڈے پر کولمبیئن پولیس کے ساتھ مل کر تقریبا 250 سونے کے قدیم ماسک، مورتیاں اور نایاب زیورات ضبط کر لیے۔ یہ نوادرات کولمبیا میں چوری کے بعد غیر قانونی طور پر حاصل کیے گیے تھے۔


بازیاب کیے گئے قیمتی سامان میں قدیمی نوادرات اور آرٹ کے نمونے شامل ہیں جو کہ جنگ سے متاثرہ ملکوں کے عجائب گھروں سے چوری کیے گئے تھے۔

مزید پڑھیے: شام کے تاریخی نوادرات کہاں گئے؟
گزشتہ برس موسم خزاں میں ایک کارروائی کے دوران مختلف ادوار کے سکے، تاریخی ہتھیار، پینٹنگز، آثار قدیمہ کی اشیاء اور چینی مٹی کے برتن بھی ضبط کیے گئے تھے۔
ع آ / ش ج (ڈی پی اے، اے ایف پی)

DW.COM

Audios and videos on the topic