ارنب گوسوامی نے کابل میں سرینا ہوٹل کی دو منزلہ عمارت کو پانچ منزلہ بنا دیا | حالات حاضرہ | DW | 20.09.2021
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

حالات حاضرہ

ارنب گوسوامی نے کابل میں سرینا ہوٹل کی دو منزلہ عمارت کو پانچ منزلہ بنا دیا

بھارتی نیوز اینکر ارنب گوسوامی کے حالیہ دعوؤں کا سوشل میڈیا پر بہت مذاق اڑایا جا رہا ہے۔ گوسوامی نے دعوی کیا کہ کابل کے سرینا ہوٹل کی پانچویں منزل پر پاکستانی فوج موجود ہے۔ حالانکہ اصل میں یہ عمارت دو منزلہ ہے۔

بھارتی میڈیا کے جارحانہ مزاج رکھنے والے ٹی وی اینکر ارنب گوسوامی نے حال ہی میں اپنے پروگرام 'دی ڈیبیٹ‘ میں دعویٰ کیا کہ کابل میں واقع سرینا ہوٹل کی پانچویں منزل پر پاکستانی فوج موجود ہے۔ تاہم بعد ازاں پتہ چلا کہ کابل میں سرینا ہوٹل کی عمارت کی گراؤنڈ فلور کے علاوہ محض دو منزلیں ہی ہیں۔ اس کے بعد سے سوشل میڈیا پر بھارتی اینکر  کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

ارنب کے اس دعوے کی حقیقت اس وقت سامنے آئی جب ٹوئٹر  پر محمد زبیر نامی ایک بھارتی فیکٹ چیکر نے کابل میں سرینا ہوٹل کی ایک تصویر پوسٹ کرتے ہوئے بتایا کہ سرینا ہوٹل کی عمارت کی تو صرف دو منزلیں ہیں۔

گزشتہ ہفتے پندرہ ستمبر کو ری پبلک ٹی وی پر نشر کیے گئے اپنے مذکورہ پروگرام کے دوران ارنب گوسوامی نے افغانستان کی وادی پنجشیر میں پاکستانی فوج  کی مبینہ موجودگی کے حوالے سے اپنے انٹیلی جنس ذرائع  کا حوالہ دیتے ہوئے کچھ معلومات بتائی تھیں۔ اس شو میں ایک بھارتی تجزیہ نگار اور پی ٹی آئی کے ترجمان عبدالصمد یعقوب بھی شرکت کر رہے تھے۔

پی ٹی آئی کے ترجمان کی جانب سے ان دعوؤں کو چیلنج کیے جانے کے باوجود اینکر نے ایک مرتبہ پھر اپنی اطلاعات درست ہونے کا دعوی کیا۔ ارنب گوسوامی نے مزید کہا کہ وہ ہوٹل میں پاکستانی اہلکاروں کے کمروں کے نمبر بھی جانتے ہیں۔

ارنب گوسوامی کے سرینا ہوٹل سے متعلق دعوے غلط ثابت ہونے کے بعد وہ  سوشل میڈیا پر ArnabGoswami#  کے ہیش ٹیگ سے ٹرینڈ کرتے رہے۔ اس دوران سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے مختلف تبصرے کیے جا رہے ہیں۔ لیکن اکثریت بھارتی اینکر کے طرز صحافت  پر سوالات اٹھارہی ہے۔

جویریا صدیقی نامی پاکستانی صحافی نے ایک ٹوئٹ میں لکھا، ''سوشل میڈیا پر ان [ارنب گوسوامی] کی زرد صحافت  پر ہنس رہے ہیں۔‘‘

ایک سوشل میڈیا صارف اقصیٰ کینجھر لیلیٰ جمالی نے ایک ٹوئٹ میں پاکستانی خفیہ ایجنسی کے بارے میں طنزیہ انداز میں لکھا، 'آئی ایس آئی کو اسی لیے خلائی مخلوق کہا جاتا ہے کیونکہ وہ غائبانہ پانچویں فلور پر بھی رہ سکتے ہیں۔‘‘

ع آ / ع ا (سوشل میڈیا)

DW.COM