آسٹریلین اوپن: صوفیہ کینن فتح مند، گاربینےموگوروسا ہار گئیں | کھیل | DW | 01.02.2020
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages
اشتہار

کھیل

آسٹریلین اوپن: صوفیہ کینن فتح مند، گاربینےموگوروسا ہار گئیں

رواں برس ٹینس کھیل کے پہلے گرینڈ سلیم ٹورنامنٹ آسٹریلین اوپن میں خواتین کی چیمپیئن شپ صوفیہ کینن نے جیت لی۔ ہسپانوی خاتون کھلاڑی کو شکست کا سامنا رہا۔

آسٹریلوی شہر میلبورن میں ٹینس کھیل کے رواں برس کے پہلے گرینڈ سلیم ٹورنامنٹ میں ہسپانوی کھلاڑی گاربینے موگوروسا نے پہلے سیٹ میں کامیابی حاصل کی تو ایسا محسوس ہوا کہ وہ یہ فائنل میچ آسانی جیت لیں گی۔ لیکن امریکی کھلاڑی صوفیہ کینن نے اندازوں کو غلط ثابت کر دیا۔ انہوں نے دوسرا سیٹ جیت کر اپنی کامیابی کی بنیاد رکھ دی۔

کینن نے ویمن سنگلز چیمپیئن شپ کے فائنل میچ کا دوسرا سیٹ چھ دو سے جیتا جب کہ پہلا سیٹ وہ چھ چار سے ہار گئی تھیں۔ تیسرے سیٹ میں انہوں نے ابتدائی دو گیمز جیت کر شائقین کو حیران کر دیا۔

اس برتری کو چھبیس سالہ موگوروسا نے برابر کر دیا۔ لیکن اگلی گیمز میں کینن نے اپنے زوردار کھیل سے اُس تاثر کو بھی زائل کر دیا کہ یہ سیٹ خاصا کانٹے دار رہ سکتا ہے۔ انہوں نے اپنی پرفارمنس سے اپنی مدمقابل کو بے بس کر دیا۔

Sofia Kenin gewinnt Tennis Turnier Australien Open

ہسپانوی کھلاڑی گاربینے موزوروسا شکست کے بعد

گاربینے اپنی حریف کے مقابلے میں زیادہ غلطیاں کرنے کی مرتکب بھی ہوئیں اور یہی ان کے شکست کا سبب بنا۔ مبصرین کا خیال ہے کہ سابق عالمی نمبر ایک فائنل میچ میں پوری طرح فٹ دکھائی نہیں دے رہی تھیں۔

انجام کار امریکی کھلاڑی نے ہسپانیہ کی گاربینے موگوروسا کو تین سیٹ کے میچ میں سے دو سیٹ جیت کر شکست سے دوچار کر دیا۔ اس طرح وہ آسٹریلین اوپن کی نئی چیمپیئن بن گئی ہیں۔ انہوں نے یہ میچ چار چھ، چھ دو اور چھ دو سے جیتا۔

اکیس سالہ امریکی کھلاڑی کینن کی عالمی درجہ بندی میں پوزیشن چودہویں تھی۔ اس فائنل میچ کے بعد وہ ٹاپ ٹین میں جگہ بنا لیں گی۔ موگوروسا انجریز کی وجہ سے مختلف رینکنگ ٹورنامنٹ سے باہر تھیں۔ وہ اس ٹورنامنٹ میں شرکت سے قبل عالمی رینکنگ میں بتسیواں مقام رکھتی تھیں۔

ع ح ⁄ ش ح ( اے ایف پی،روئٹرز)

DW.COM