1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

T20 کے مقابلے شروع، فیورٹ کون؟

سابق مایہ ناز کرکٹر وسیم اکرم نے پاکستان اور بھارت کو آئی سی سی عالمی کپ ٹوئنٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ جیتنے کے لئے فیورٹ قرار دیا ہے۔

default

ویسٹ انڈیز میں آج مقامی وقت کے مطابق دوپہر ایک بجے جبکہ عالمی وقت کے مطابق شام پانچ بجے نیوزی لینڈ اور سری لنکا کے مقابلے سے اس ٹورنامنٹ کا آغاز ہوگا۔ ٹی 20 ورلڈ کپ میں بارہ ٹیمیں شریک ہو رہی ہیں اور یہ مقابلے 16 مئی تک جاری رہیں گے۔

Shahid Afridi

شاہد آفریدی کہہ چکے ہیں کہ وہ ٹورنامنٹ کے دوران جارحانہ طرز کا کھیل پیش کریں گے اور یہی ٹیم کا گیم پلان ہوگا

اکرم نے بھارت روانگی سے قبل لاہور میں صحافیوں سے بات چیت میں کہا کہ آسٹریلیا اور جنوبی افریقہ بھی جیت سکتی ہیں تاہم ویسٹ انڈیز کی پِچ پر پاکستانی اور بھارتی اسپنرز کو معاونت مل سکتی ہے۔ ان کے بقول یہ پاکستانی ٹیم کرکٹ کے عالمی منظر نامے سے کافی عرصے تک دو رہی ہے، اسی لئے ان میں جیت کی پیاس زیادہ ہے۔

وسیم اکرم کہتے ہیں، ’ٹوئنٹی ٹوئنٹی میں آپ کو آفریدی جیسا جارحانہ کپتان چاہئے ہوتا ہے، ویسے تو وہ اپنی شاندار بلے بازی اور گیند بازی سے اکیلے ہی جتاسکتا ہے، لیکن اس کے ساتھ ساتھ ٹیم کی بولنگ بھی مضبوط ہے۔‘

بھارتی ٹیم کی تعریف کرتے ہوئے پاکستانی ٹیم کے سابق کپتان نے کہا، ’بہت زیادہ امکان ہے کہ 2007 ء کی چیمپئن بھارت اور موجودہ دفاعی چیمپئن پاکستان کے مابین اس سال کا فائنل کھیلا جائے۔‘

دفاعی چیمپیئن پاکستان اپنا میچ یکم مئی کو عالمی وقت کے مطابق ساڑھے پانچ بجے بنگلہ دیش کے خلاف کھیلے گا۔ بھارت بھی اسی دن عالمی وقت کے مطابق ڈیڑھ بجے افغانستان کے خلاف میچ سے ٹورنامنٹ کا آغاز کرے گا۔

Der Kapitän des indischen Cricketteams Mahendra Singh Dhoni

بھارتی کپتان ایم ایس دھونی نے اپنے کھلاڑیوں کو خبردار کیا ہے کہ افغانستان کی ٹیم کو آسان حریف نہ سمجھا جائے

دریں اثنا اس مرتبہ ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ میں پہلی مرتبہ شریک ہونے والی افغانستان کی ٹیم نے پریکٹس میچ میں آئرلینڈ کو شکست دے کر اس سلسلے کا کامیاب آغاز کردیا ہے۔ ٹیم کے کوچ کبیر خان کے مطابق افغانستان میں کرکٹ کا کھیل مقبول ہوتا جارہا ہے اور وہاں کے عوام اس کھیل سے متعلق زیادہ نہیں جانتے مگر جیت پر بہت زیادہ خوش ہوتے ہیں۔

انہوں نے کہا، ’افغان عوام ہماری اب تک کی فتوحات سے بہت خوش ہیں، وہ ہم سے اس قسم کے سوال کرتے ہیں کہ اگر ہم متحدہ عرب امارات، اسکاٹ لینڈ اور آئرلینڈ کو ہراسکتے ہیں تو پاکستان اور آسٹریلیا کو کب ہرائیں گے۔‘

رپورٹ : شادی خان سیف

ادارت : ندیم گِل

DW.COM