1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

'یہ دیوار مت کھڑی کیجیے!‘

سابق امریکی صدر نے روسی رہنما گورباچوف کو دیوار برلن گرانے کے لیے کہا تھا۔ اب کئی دہائیوں کے بعد برلن کے میئر میشائیل مؤلر نے صدر ٹرمپ سے اپیل کی ہے کہ وہ میکسیکو کی سرحد پر دیوار تعمیر نہ کریں۔

جرمن دارالحکومت برلن کے میئر نے جمعے کے روز نئے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے امریکا اور میکسیکو کی سرحد پر دیوار تعمیر کرنے کے فیصے کی شدید مذمت کی اور اسے سرد جنگ کے زمانے میں دیوار برلن کے ذریعے لوگوں کو تقسیم کرنے کے عمل سے تشبیہ دی۔

میشائیل مؤلر کا اس حوالے سے کہنا تھا، ’’ہم برلن کے باسی یہ اچھی طرح جانتے ہیں کہ ایک براعظم کو دیوار کے ذریعے منقسم کرنے سے کیا نقصانات ہوتے ہیں۔‘‘

مؤلر کا مزید کہنا تھا کہ برلن منقسم یورپ کا شہر رہ چکا ہے اور وہ اب ایک آزاد یورپ کا شہر ہے، لہٰذا وہ ایک نئی دیوار کھڑی کیے جانے کے فیصلے پر خاموش نہیں رہ سکتا۔

مؤلر کے مطابق''بالآخر لوگ تقسیم کو عبور کر ہی لیتے ہیں۔ یہ بیسویں صدی نے ثابت کیا ہے کہ برانڈن برگ گیٹ پر عوام جمع ہوئے اور انہوں نے دیوار برلن کو ٹکڑے ٹکڑے کر دیا۔‘‘

مؤلر نے اپنے بیان میں کہا، ’’جرمنی اپنی آزادی امریکی عوام کو منسوب کرتا ہے۔ میں امریکی صدر سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ اس پرتشدد، تنہائی پسند اور غیر شمولیت پر مبنی راستے پر نہ چلیں۔ جہاں بھی اس طرح کی دیوار کھڑی کری جاتی ہے، چاہے وہ آج کا کوریا ہو، یا قبرص، وہ آزادی کو سلب کرتی ہے۔‘‘

برلن کے میئر نے خاص طور پر سابق امریکی صدر رونلڈ ریگن کے ان تاریخی کلمات کو دہرایا جو سن انیس سو ستاسی میں انہوں نے روسی رہنما میخائیل گورباچوف سے کہے تھے، ’’میں امریکی صدر سے کہتا ہوں کہ وہ ریگن کے یہ الفاظ یاد کریں: ’اس دیوار کو گرا دو۔‘ اور میں یہ کہتا ہوں: ’جناب صدر، یہ دیوار مت کھڑی کیجیے!‘‘

DW.COM