1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

یونان کی ہر ممکن مالی امداد کی جائے گی: میرکل

یونان کے وزیر اعظم اپنے ملک کی علیل اقتصادیات کی بحالی کے سلسلے میں منگل کے روز جرمنی پہنچے ہیں۔ وہ جرمن تاجروں اور حکومتی اہلکاروں کو یقین دلانے کی کوششش میں ہیں کہ ان کا ملک موجودہ صورت حال کا مقابلہ کر سکتا ہے۔

default

انگیلا میرکل اور پاپاندریو

یونان کے وزیر اعظم جورج پاپاندریو اور جرمن کارباروی شخصیات کے ساتھ میٹنگ میں خطاب کرتے ہوئے جرمن چانسلر انگیلا میرکل کا کہنا تھا کہ قرض کے بوجھ تلے دبے یونان کی ہر ممکن مدد کی جائے گی۔ جرمن پارلیمنٹ میں یورپی مالیاتی استحکام سہولت یا European Financial Stability Facility  کے بل پر ووٹنگ سے قبل جرمنی کی اہمیت خاصی اہم ہے۔ یہ ووٹنگ پرسوں جمعرات کے روز بنڈس ٹاگ میں ہو رہی ہے۔

Flash-Galerie Angela Merkel BDI

انگیلا میرکل جرمن کاروباری شخصیات سے خطاب کررہی ہیں

 جرمنی میں مالیاتی اور کارباری حلقوں میں یہ بحث جاری ہے کہ کیوں نہ یونان کو یورو زون سے خارج کردیا جائے اور اس کو دیوالیہ پن کے عمل سے گزرنے بھی دیا جائے۔ عالمی مالی منڈیوں میں بھی انتشار اور عدم استحکام کی کیفیت یورو زون ملکوں میں قرض کے بحران کی وجہ سے پیدا ہے۔ اس مناسبت سے گزشتہ روز امریکی صدر باراک اوباما نے بھی یورپی لیڈروں کویورو زون کے چند ملکوں میں پیدا شدہ قرضے کے بحران کے حوالے سے مشورہ دیا تھا کہ وہ اس معاملے میں سبک رفتاری سے مناسب فیصلے کریں۔ گزشتہ روز امریکی اسٹاک مارکیٹ وال اسٹریٹ میں بھی شام کے وقت تیزی پیدا ہوئی تھی اور اسے بھی یونان کو دیوالیہ پن سے بچانے کی جاری کوششوں کا نتیجہ خیال کیا گیا ہے۔ 

میرکل نے اپنے خطاب میں یونانی وزیر اعظم کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ان کے ملک کی یقینی طور پر مدد کی جائے گی تا کہ مہینوں سے بری خبریں سننے کا سلسلہ بند ہو سکے۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ یہ بحران یونان کے قرضے کا ہے نا کہ یورو کرنسی کا اور یہ بحران دیگر اقوام سے یک جہتی کا تقاضا کرتا ہے۔

NO FLASH Georgios Papandreou BDI

یونانی وزیر اعظم جورج پاپاندریو

اسی میٹنگ میں یونان کے وزیر اعظم پاپاندریو کا جرمن کارباری شخصیات سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ان کی حکومت اپنے وعدوں پر کاربند رہے گی۔ پاپاندریو کا یہ بھی کہنا تھا کہ ان کا مسئلہ اپنے ملک کو بچانا ہے۔ اس موقع پر  یونان کے وزیر اعظم جورج پاپاندریو کا کہنا تھا کہ ان کا ملک اپنے قرضے کے حجم کو کم کرنے کے لیے غیر معمولی کوششوں میں مصروف ہے۔ پاپاندریو نے اس کاوش کو ماورائے انسان قرار دیا ہے۔ اس مناسبت سے یونانی وزیر اعظم نے اپنی عوام سے بھی کہا کہ وہ ان کی حکومت پر تنقید کے سلسلے کو بھی اب ختم کردے۔ یونانی وزیر اعظم اس وقت جرمنی کے دورے پر ہیں۔ وہ قرضے کے بحران کے حوالے سے جرمن اراکین پارلیمنٹ اور کاروباری شخصیات کو قائل کرنے کی کوشش میں ہیں۔

رپورٹ:  عابد حسین

ادارت:  شادی خان سیف

 

DW.COM

ویب لنکس