1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

یورپی یونین اور اقوام متحدہ کے خصوصی مشن لیبیا روانہ

لیبیا میں حکومت مخالف مظاہروں اور بڑی تعداد میں ہلاکتوں کے بعد اقوام متحدہ اور یورپی یونین کی طرف سے حالات کا جائزہ لینے کے لیے خصوصی مشن اس بحران زدہ شمالی افریقی ملک روانہ کیے گئے ہیں۔

default

نیویارک میں اقوام متحدہ کے ایک ترجمان کے مطابق لیبیا کے وزیرخارجہ موسیٰ کوسا نے سیکریٹری جنرل بان کی مون سے ٹیلی فونک گفتگو کے بعد اس بات پر آمادگی ظاہر کی کہ حالات کا جائزہ لینے کے لیے اقوام متحدہ کی ایک خصوصی ٹیم طرابلس بھیجی جائے۔

Schweiz Wirtschaft Weltwirtschaftsforum in Davos UN Ban Ki mmoon Flash-Galerie

لیبیا کی حکومت ملک میں موجود غیرملکیوں کی حفاظت یقینی بنائے اور امدادی تنظیموں کو عوام تک رسائی کی اجازت دے: بان کی مون

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل بان کی مون نے لیبیا میں رہنماؤں پر زور دیا ہے کہ سویلین آبادی کے خلاف بے جا طاقت کے استعمال اور تشدد کو فوری طور پر روکا جائے۔ انہوں نے لیبیا کی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ملک میں موجود غیرملکیوں کی حفاظت کو یقینی بنائے اور امدادی تنظیموں کو عوام تک رسائی کی اجازت دے۔ بان کی مون نے اردن کے سابق وزیرخارجہ عبداللہ خطیب کو لیبیا کے لیے اقوام متحدہ کا خصوصی نمائندہ بھی مقرر کیا ہے۔ خطیب بہت جلد لیبیا اور علاقے کے دیگر رہنماؤں سے مشاورت کا آغاز کریں گے۔

دوسری طرف یورپی یونین کے خارجہ امور کی سربراہ کیتھرین ایشٹن کے مطابق یورپی یونین کی ٹیم پہلے ہی لیبیا روانہ کی جا چکی ہے۔ یہ خصوصی مشن اٹلی سے تعلق رکھنے والے ہنگامی امداد کے ماہر اگوسٹینومیوزو کی سربراہی میں روانہ کیا گیا ہے۔ اس مشن کا مقصد جمعہ 11 مارچ کو لیبیا کے حوالے سے ہونے والے خصوصی اجلاس سے قبل حالات و واقعات کا جائزہ لینا ہے۔ اس اجلاس میں 27 رکنی یورپی یونین کی طرف سے یہ فیصلہ کیا جائے گا کہ شمالی افریقی ملک لیبیا کے عوام کی کس طرح سے مدد کی جائے۔

رپورٹ: افسر اعوان

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس