1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

ہوا سے بجلی کا حصول

ہوا سے بجلی کی پیداوار دنیا بھر میں تیزی سے اپنایا جانے والا طریقہ بنتا جا رہا ہے۔

default

دنیا بھر میں کئی ممالک اس طریقہ توانائی کی طرف مائل ہو رہے ہیں

توانائی کو ایک قسم سے دوسری قسم میں باآسانی تبدیل کیا جا سکتا ہے۔ تیزی سے چلتی ہوئی ہوا بڑے بڑے پنکھوں پر ٹکرا کر انہیں حرکت دیتی ہے اور اس طرح یہ پنکھوں سے حاصل ہونے والی حرکی توانائی کو برقی توانائی میں تبدیل کر لیا جاتا ہے۔

Schafe weiden in der Nähe von Windrädern in Klanxbuell an der Nordsee

اس طریقہ پر ایک اعتراض یہ بھی کیا جاتا ہے کہ اس سے قدرتی حسن میں مصنوعی آمیزش نظر آتی ہے

قابل تجدید توانائی کے ذرائع میں ہوا ئی قوت یا ونڈ پاور ایک اہم اور موثر طریقہ کار ہے۔ ہوا کا بنیادی محرک سورج کی کرنوں کا سطح زمین سے ٹکرانا ہے جس کے باعث مختلف خطوں پر تبدیل ہوتا درجہ حرارت ہوا کی پیدائش کا موجب بنتا ہے۔ یہ ایک نہ ختم ہونے والا سلسلہ ہے سو سائنسدانوں اور ماہرین کی رائے میں اس طریقہ توانائی سے نہ صرف آلودگی کا احتمال نہیں بلکہ یہ ایک انتہائی سستا ذریعہ بھی ہے۔

ہوائی قوت سے بجلی کے حصول کے لئے بڑے بڑے، کم مزاحمتی گردشی پنکھے ہوا کے مقابل لگائے جاتے ہیں۔ کارکردگی کے لحاظ سے ونڈ پاور کے لئے اوسط علاقہ ایسے علاقے کو کہتے ہیں جہاں کم از کم بارہ میل فی گھنٹہ کی رفتار سے ہوا چلتی ہو۔

Deutschland Nordsee Windkraft Offshore Pilotwindanlage

جرمنی کے علاوہ کئی یورپی ممالک اس طریقہ توانائی سے بجلی کی ضروریات کا بڑا حصہ پورا کرتے ہیں

حرکی توانائی سے برقی توانائی کا حصول گھروں میں بجلی کی موٹر جیسا مگر بالکل الٹ ہوتا ہے یعنی موٹر کو بجلی فراہم کی جاتی ہے تو یہ گھومنے لگتی ہے۔ بالکل اسی طرح اس طریقہ میں ہوا کی مدد سے پنکھوں اور پنکھوں سے چرخیوں کو گھومایا جاتا ہے اور بجلی پیدا ہوتی ہے۔

اس وقت ونڈ پاور کی بہترین سائٹ کی تعمیر پر تقریبا وہی لاگت آتی ہے جو کوئلے سے بجلی کے حصول کے کارخانے پر آتی ہے مگر بعد میں نہ تو اس کے لئے کسی مزید خام مال کی ضرورت ہوتی ہے اور نہ ہی بہت زیادہ عملے کی۔

اس طریقہ کار کےانتہائی ماحول دوست کہلانے کی وجہ یہ ہے کہ اس طریقہ توانائی میں ایک طرف تو فضائی آلودگی پیدا نہیں ہوتی اور دوسری جانب کسی قسم کے خام مال کی ضرورت بھی نہیں پڑتی۔

Ägypten Windenergie in der Wüste Hurgada

ہوا کی مدد سے گھومنے والے یہ پنکھے بجلی کی پیدوار وار کا ایک اہم ذریعہ بنتے جا رہے ہیں

تاہم اس طریقہ توانائی سے عمومی طور پر دو مسائل پیدا ہو تےہیں یعنی پرانے طرز کے ٹربائن سے شور کا پیدا ہونا جسے نئے ڈیزائینوں میں کم تر تو کیا گیا ہے تاہم اب تک مکمل طور پر ختم نہیں کیا جا سکا اور ماحول پر اس کا دوسرا اثر بڑی تعداد میں پرندوں کی ہلاکت ہے۔ جدید ٹیکنالوجی سے تیار کردہ نئے ہوائی پنکھوں میں اس نقص کو انتہائی کم کر دیا گیا ہے تاہم اب تک ختم نہیں کیا جا سکا۔ جب ہوا بہت تیزی سے چلتی ہے اور یہ پنکھے تیز رفتاری سے گھومتے ہیں تو بڑی تعداد میں پرندے ان پنکھوں کی زد میں آ جاتے ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اس ٹیکنالوجی پر جس رفتار سے کام کیا جا رہا ہے اس سے امید ہے کہ سن دوہزار بیس تک ونڈ پاور، توانائی کے حصول کا سب سے سستا ذریعہ ہو گا۔