1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ہنگو خود کُش حملے میں کم از کم17 افراد ہلاک

آج ایک خود کُش حملہ آور نے شمال مغربی پاکستان میں بارود سے لدا ایک ٹریکٹر ایک ہسپتال سے ٹکرا دیا، جس کے نتیجے میں کم از کم17 افراد ہلاک ہو گئے۔

default

حکام اِسے فرقہ وارانہ حملہ قرار دے رہے ہیں۔ حکام نے بتایا ہے کہ ہنگو نامی شہر میں واقع ہسپتال کے اندر ایک کمرے میں شیعہ مسلمان عبادت کر رہے تھے، جب یہ دھماکہ کیا گیا۔ متعدد پولیس افسران نے بتایا ہے کہ بمبار نے اپنا ٹریکٹر ہسپتال کی عمارت سے ٹکرا دیا تھا۔ اُنہوں نے یہ بھی بتایا کہ مرنے والوں میں تین پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔ مجموعی طور پر سولہ افراد زخمی ہوئے ہیں۔

Pakistan Anschlag Sufi Heiligtum

محرم کے مہینے میں فرقہ وارانہ تشدد کے واقعات میں بھی اضافہ ہو جاتا ہے

اِس طرح طالبان اپنے خود کُش حملوں کا وہ سلسلہ بدستور جاری رکھے ہوئے ہیں، جو اُنہوں نے گزشتہ برس اپنے ٹھکانوں کے خلاف حکومتی سکیورٹی فورسز کی کارروائیوں کے بعد سے شروع کیا تھا۔

محرم کے مہینے میں فرقہ وارانہ تشدد کے واقعات میں بھی اضافہ ہو جاتا ہے۔ شیعہ مسلمانوں کے لئے مقدس اِس مہینے کا آغاز بدھ کے روز سے ہو چکا ہے اور عموماً سنی عسکریت پسند اِس مہینے کے دوران شیعہ جلوسوں اور اجتماعات کو اپنے حملوں کا نشانہ بناتے ہیں۔ ہنگو میں گزشتہ چند برسوں کے دوران ایسے متعدد واقعات عمل میں آ چکے ہیں۔

ابھی بدھ ہی کے روز کوہاٹ میں ایک بس اسٹینڈ پر ایک خود کُش حملہ آور نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا تھا، جس کے نتیجے میں کم از کم سولہ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

رپورٹ: امجد علی

ادارت: عدنان اسحاق

DW.COM

ویب لنکس