1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

فن و ثقافت

ہانگ کانگ کے میکڈونلڈز میں شادی کی تقریبات بھی

امریکی فاسٹ فوڈ ریستورانوں کے سلسلے میکڈونلڈز نے اعلان کیا ہے کہ اس کی ہانگ کانگ میں قائم شاخوں میں آئندہ شادی کی باقاعدہ تقریبات کا اہتمام بھی کیا جا سکے گا۔

default

شادی اور فاسٹ فوڈ اب ایک ساتھ

یہ پیشکش ہانگ کانگ کے ان تمام بالغ شہریوں کے لئے ہے جو فاسٹ فوڈ کے دلدادہ ہیں اور یہ پسند کریں گے کہ ان کی شادی بھی کسی میکڈونلڈز ریستوراں ہی میں ہو۔ اس سلسلے میں برطانیہ کی اس سابقہ نوآبادی اور چین کے خصوصی انتظامی علاقے میں منگل بارہ اکتوبر سے میکڈونلڈز ریستوراں کی تین شاخوں میں باقاعدہ بکنگ بھی شروع کر دی گئی ہے۔

Deutschland Arbeitsmarkt McDonald

ہانگ کانگ میں میکڈونلڈز ریستورانوں کو الکوحل والے مشروبات بیچنے کی اجازت نہیں ہے

اب ان ریستورانوں میں شادی کی جن تقریبات کی بکنگ شروع ہو گئی ہے، ان کا انعقاد اگلے برس یکم جنوری یا اس کے بعد سے ممکن ہو گا۔ اس امریکی فاسٹ فوڈ چین کی طرف سے ہانگ کانگ میں کئے گئے ایک اعلان کے مطابق ابتدائی طور پر ایسی تقریبات میں دلہا اور دلہن پچاس سے لے کر ایک سو تک مہمانوں کو مدعو کر سکیں گے۔ بعد میں ایسی تقریبات میں مدعو کئے جانے والے زیادہ سے زیادہ مہمانوں کی تعداد میں مزید اضافہ کر دیا جائے گا۔

بتایا گیا ہے کہ مستقبل قریب میں ہانگ کانگ میں کسی میکڈونلڈز ریستوراں میں شادی کی ایسی ایک اوسط تقریب کے انعقاد پر محض چند سو امریکی ڈالر کے برابر لاگت آئے گی جبکہ اس وقت ہانگ کانگ میں شادی کی ایک عام تقریب پر اٹھنے والی لاگت ہزاروں امریکی ڈالر کے برابر ہوتی ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ ہانگ کانگ کے کسی میکڈونلڈز ریستوراں میں شادی کے لئے آنے والے جوڑوں کو مقامی حکومت کے آبادی اور خاندانی امور سے متعلقہ محکمے کے نمائندے کے طور پر اپنی شادی کو قانونی حیثیت دینے کے لئے رجسٹرار کو اپنے طور پر ہی مدعو کرنا ہو گا۔ اس کے علاوہ شادی کے سرٹیفیکیٹ پر دلہا، دلہن اور سرکاری اہلکار کے دستخطوں کے بعد مہمانوں کو پینے کے لئے صرف سافٹ ڈرنکس دئے جائیں گے کیونکہ ہانگ کانگ میں میکڈونلڈز ریستورانوں کو الکوحل یا الکوحل والے مشروبات بیچنے کی اجازت نہیں ہے۔

NO FLASH McDonald’s in Peking

ہانگ کانگ کے میکڈونلڈز میں شادی کی تقریبات بھی

’میکڈونلڈز ہانگ کانگ‘ کے ایک ترجمان کے مطابق اس ادارے کی طرف سے اپنے ہاں شادی کی تقریبات کے انعقاد کی پیشکش دنیا بھر میں کسی فاسٹ فوڈ چین کی طرف سے کی جانے والی اپنی نوعیت کی اولین پیشکش ہے۔ ’’اگر عام شہریوں کو یہ بات پسند آئی اور ہمیں زیادہ آرڈر ملنے لگے تو ہم یہی پیشکش ہانگ کانگ میں اپنے سبھی ریستورانوں میں کرنے لگیں گے۔‘‘

ہانگ کانگ میں میکڈونلڈز کی پہلی شاخ 1975 میں کھولی گئی تھی اور آج سات ملین کی آبادی والے اس شہر میں میکڈونلڈز کی 200 سے زائد شاخیں کام کر رہی ہیں، جہاں تقریباﹰ ہر وقت گاہکوں کا ہجوم رہتا ہے۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس