1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کیوبا میں قیادت کی مدت دس برس تک ’محدود‘، کاسترو

کیوبا کے صدر راؤل کاسترو نے، جن کے بھائی فیدل کاسترو نے پانچ دہائیوں تک کیوبا پر حکومت کی، اہم حکومتی اور سیاسی عہدوں پر کام کرنے کی مدت کو زیادہ سے زیادہ دس برس تک محدود کرنے کی تجویز کی حمایت کی ہے۔

default

ہفتے کے روز راؤل کاسترو نے کمیونسٹ پارٹی کی کانگریس میں شریک ایک ہزار مندوبین سے خطاب کرتے ہوئے کہا، ’’ہم اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ ہمارے حق میں یہی بہتر ہو گا کہ پانچ برس پر محیط اعلیٰ حکومتی اور سیاسی کردار کو زیادہ سے زیادہ دو مرتبہ ہی حاصل کیا جا سکے۔‘‘

راؤل کاسترو نے سن 2006ء میں اپنے بھائی فیدل کاسترو کی علالت کے سبب ملکی صدارت کا منصب سنبھالا تھا۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات میں یہ ایک اہم اور ضروری قدم ہو گا۔

Jubiläum der gescheiterten Invasion in der Schweinebucht Kuba

کاسترو برادران کے حامی ایک اجتماع کے دوران

اس اعلان سے یہ بات واضح نہیں ہوئی کہ جون میں 82 برس کے ہو جانے والے راؤل کاسترو اگلی مدت کے لیے صدارتی عہدے پر براجمان رہنا چاہتے ہیں یا نہیں۔ تاہم انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ اس وقت کیوبا میں کوئی نوجوان رہنما ایسا نہیں، جو فوری طور پر پارٹی، ملک اور حکومت کی باگ ڈور سنبھال سکے۔

’’ماضی میں ہم نے اس سلسلے میں توجہ نہیں دی۔ ہم نے نہیں سوچا کہ مستقبل میں ذمہ داریاں کسی نئے رہنما کو کیسے سونپی جائیں گی۔ ایسا رہنما، جو تجربہ کار اور بردبار ہو اور جو نئی اور پیچیدہ ذمہ داریوں کو بھرپور انداز سے انجام دینے کی پوری صلاحیت رکھتا ہو۔‘‘

کیوبا میں چار روز تک جاری رہنے والی کمیونست پارٹی کی اس کانگریس میں صدر کاسترو کی جانب سے تجویر کردہ معاشی اور اقتصادی اصلاحات کی منظوری دی جائے گی جبکہ راؤل کاسترو کے 84 سالہ بھائی فیدل کاسترو پارٹی سربراہ کی ذمہ داریوں سے باقاعدہ طور پر الگ ہوں گے۔

کیوبا میں یک جماعتی کمیونسٹ حکومت کے آغاز سے اب تک یہ چھٹی پارٹی کانگریس ہے، جبکہ گزشتہ 14 برسوں کے دوران کیوبا میں کمیونسٹ پارٹی کا یہ پہلا اجتماع ہے۔

رپورٹ : عاطف توقیر

ادارت : افسر اعوان

DW.COM

ویب لنکس