1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

کوپن ہیگن کانفرنس، یورپی یونین کی مشترکہ حکمت عملی

گذشتہ ماہ کے آخر میں برسلز میں یورپی یونین کے رکن ملکوں کے سربراہان مملکت و حکومت کی جو کانفرنس ہوئی، اُس میں شرکاء کے مابین کوپن ہیگن کانفرنس میں یونین کے ایک مشترکہ موقف کی سبھی تفصیلات پر اتفاق رائے ہو گیا۔

default

جرمن وزیرماحولیات اپنے سویڈش ہم منصب کے ہمراہ

اس سربراہی اجلاس کے بعد یونین کے موجودہ صدر ملک سویڈن کے وزیر اعظم فریڈرِک رائن فَیلڈ نے اعلان کیا کہ یورپ کی کوپن ہیگن میں مذاکراتی پوزیشن بہت بہتر ہو گئی ہے۔ اس کے علاوہ غریب اورترقی پذیر ریاستوں کے لئے تحفظ ماحول کے شعبے میں مالی امداد کے حجم سے متعلق وہ مسئلہ بھی بالآخر طے ہو گیا جو کئی ہفتوں سے متنازعہ بنا ہوا تھا۔ اس بارے میں یورپی کمیشن کے صدر یوزے مانوئل باروسو کہتے ہیں کہ یورپی یونین بیرونی دنیا میں تحفظ ماحول کی کوششوں پر اٹھنے والے مالی اخراجات کے ایک مناسب حصے کی ادائیگی اپنے سر لے لے گی۔

Protest EU Umweltministertreffen in Brüssel

برسلز میں اجلاس کے موقع پر ماحولیاتی تبدیلیوں کے حوالے سے ٹھوس اقدامات کے حق میں مظاہرہ کرتے ہوئے

اسی بارے میں یورپی یونین کی کونسل کے موجودہ سربراہ اور سویڈن کے وزیر اعظم رائن فَیلڈ کہتے ہیں: "ہم ایک اتفاق رائے تک پہنچنے میں کامیاب رہے۔ کوپن ہیگن کی عالمی کانفرنس کا کاؤنٹ ڈاؤن شروع ہو گیا ہے، اور یورپی یونین کی اس عالمی اجتماع میں مذاکراتی پوزیشن بھی بہت بہتر ہو گئی ہے۔ اس پوزیشن سے یورپ ڈنمارک میں ہونے والی مکالمت میں قائدانہ حیثیت سے حصہ بھی لے سکتا ہے، اور دوسروں کی حوصلہ افزائی کا باعث بھی بن سکتا ہے۔

Yvo de Boer beim EU Umweltministertreffen in Brüssel

برسلز میں یورپی وزیر ماحولیات کے اجلاس میں اقوام متحدہ کے ماحولیاتی شعبے کے سربراہ بھی شریک ہوئے

اس اتفاق رائے کے تحت ضرورت مند ملکوں کو ٹیکنالوجی کی منتقلی بھی عمل میں آئے گی اور انہیں طویل المدتی بنیادوں پر بہتر حکومتی کارکردگی کی ضمانتیں بھی دینا ہوں گی۔ مقصد یہ ہوگا کہ زہریلی کاربن گیسوں کے اخراج کی 1990ء میں ریکارڈ کی گئی شرح کے مقابلے میں، سن 2050ء تک ایسی گیسوں کے فضا میں اخراج میں اسّی سے لے کر پچانوے فیصد تک کمی لائی جائے۔ اس کے علاوہ تحفظ ماحول کے شعبے میں سرمایہ کاری پر بھی اتفاق رائے ہو گیا ہے۔

یورپی یونین کی رائے میں ترقی پذیر ملکوں میں تحفظ ماحول کےشعبے میں اٹھنے والے لازمی اخراجات کی مالیت 2020ء تک سالانہ قریب سو بلین یورو تک پہنچ سکتی ہے۔ ہمارا اندازہ ہے کہ ان مالی وسائل میں سے 2020ء تک بین الاقوامی امداد کی مد میں سالانہ بائیس سے لے کر پچاس بلین یورو تک مہیا کئے جا سکیں گے۔"

عالمی آب و ہوا کے تحفظ اور کوپن ہیگن کانفرنس کی کامیابی کی اشد ضرورت کے بارے میں یورپی کمیشن کے صدر یوزے مانوئل باروسو کہتے ہیں: "ہم ایک بہت نازک مرحلے سے گزر رہے ہیں۔ بہت سے لوگ ایسے بھی ہیں جو یہ سوچتے ہیں کہ کوپن ہیگن کانفرنس ایک ایسا خطرہ ہے، جس کے نتیجے میں کچھ بھی ہو سکتا ہے۔ ہماری رائے یہ ہے کہ ہم اس کانفرنس کو واقعی کامیاب بنا سکتے ہیں۔ اس کے لئے یورپی یونین اپنے قائدانہ کردار کے بارے میں بہت سنجیدہ ہے۔"

رپورٹ : مقبول ملک

ادارت : عاطف بلوچ