کولمبو ميں سيلاب، پانچ لاکھ شہری بے گھر | حالات حاضرہ | DW | 20.05.2016
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کولمبو ميں سيلاب، پانچ لاکھ شہری بے گھر

سری لنکا ميں شديد بارشوں کے سبب تريسٹھ افراد ہلاک اور کُل مِلا کر تقريباً نصف ملين افراد متاثر ہو چکے ہيں۔ بارشوں اور مٹی کے تودے گرنے کی وجہ سے کولمبو ميں بھی قريب پانچ لاکھ افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کيا جا چکا ہے۔

قدرتی آفات سے نمٹنے والے سری لنکن محکمے کے مطابق تازہ پيش رفت ميں کولمبو شہر کے نشيبی علاقوں سے تقريباً پانچ لاکھ افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کيا جا چکا ہے۔ دارالحکومت کے بلدياتی علاقے کی مجموعی آبادی قريب ساڑھے چھ لاکھ ہے۔

دريائے کيلانی کے آس پاس واقع کولمبو کے شمال مشرقی علاقے بارشوں سے سب سے زيادہ متاثر ہوئے۔ ملکی بحريہ کے حکام کے مطابق کولمبو ميں بارش کا سلسلہ اب بھی جاری ہے، جس سبب دريا کی سطح ميں مزيد اضافہ ممکن ہے۔ شہر کے متاثرہ حصوں سے فرار ہو کر محفوظ مقامات تک پہنچنے کے ليے مقامی لوگوں نے ربڑ کی کشتيوں کا سہارا ليا، جس ميں ملکی بحريہ کے اہلکاروں نے بھی ان کی مدد کی۔

سری لنکا ميں پچھلے ہفتے کے اختتام سے شديد بارشوں اور ان کے نتيجے ميں مٹی کے تودے گرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ پچھلے پچيس برسوں ميں ہونے والی شديد ترين بارشوں کے نتيجے ميں کولمبو ميں تين جب کہ ملک بھر ميں کُل تريسٹھ افراد ہلاک ہو چکے ہيں۔ نيشنل ڈزاسٹر مينجمنٹ سينٹر کے مطابق ملک کے مختلف حصوں ميں بارشوں سے متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد نصف ملين کے لگ بھگ ہے۔ کئی علاقوں ميں پچاس فٹ يا پندرہ ميٹر تک کيچڑ جمع ہو گئی ہے۔

کولمبو سے ساٹھ ميل شمال مشرق ميں واقع کيگالے ضلع ہے، جہاں مٹی کے تودے گرنے کے دو مختلف واقعات ميں اب تک چونتيس افراد ہلاک ہو چکے ہيں

کولمبو سے ساٹھ ميل شمال مشرق ميں واقع کيگالے ضلع ہے، جہاں مٹی کے تودے گرنے کے دو مختلف واقعات ميں اب تک چونتيس افراد ہلاک ہو چکے ہيں

اس جزيرے کا سب سے زيادہ متاثرہ حصہ کولمبو سے ساٹھ ميل شمال مشرق ميں واقع کيگالے ضلع ہے، جہاں مٹی کے تودے گرنے کے دو مختلف واقعات ميں اب تک چونتيس افراد ہلاک ہو چکے ہيں۔ ايک علاقائی پوليس اہلکار کے مطابق منگل سے اب تک سينتيس بچوں سميت کُل 144 افراد لاپتہ رپورٹ کيے جا چکے ہيں۔

ملکی صدر ميتھری پالا سری سينا نے ملک کے تمام شہريوں سے اپيل کی ہے کہ وہ متاثرہ افراد کی مدد کريں۔ انہوں نے اپنے ٹيلی وژن خطاب ميں کہا، ’’ہميں بين الاقوامی برادری ميں اپنے کچھ اتحادی ممالک سے مدد وصول ہوئی ہے۔ تاہم اب ميں اپنے ملک کے شہريوں، کمپنيوں اور غير سرکاری تنظيموں سے اپيل کرتا ہوں کہ وہ متاثرين کی ہر ممکن مدد کريں۔‘‘

دريں اثناء انگلينڈ کا دورہ کرنے والی سری لنکا کی بين الاقوامی کرکٹ ٹيم نے ايک ملين سری لنکن روپے يا سات ہزار ڈالر کی امداد کا اعلان کيا ہے۔ سری لنکا اور انگلينڈ کے مابين پہلا ٹيسٹ ميچ انیس مئی کو شروع ہوا، جس کے آغاز ميں مہمان ٹيم کے کھلاڑی سياہ بينڈ پہن کر ميدان ميں اترے۔

ملکی محکمہ موسميات کے مطابق بارشوں کا يہ سلسلہ جنوب مغربی مون سون بارشوں سے پہلے، خليج بنگال ميں ہوا کے دباؤ ميں کمی کے سبب جاری ہے۔