1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

’کم جہیز‘ پر سسرال نے تیزاب پلا کر مار ڈالا

پاکستان میں ایک نئی نویلی دہلن کو اس کے سسرال والوں نے زبردستی تیزاب پلا کر ہلاک کر دیا۔ سسرال والا کا کہنا تھا کہ دلہن اپنے ساتھ جہیز کم کیوں لائی۔

خبر رساں ادارے ڈی پی اے کے مطابق یہ واقعہ پاکستانی صوبے پنجاب کے ضلع ڈسکہ میں پیش آیا، جہاں رواں ماہ شادی کے بعد دلہن کو کم جہیز کا طعنہ دیا جا رہا تھا۔ پولیس کے مطابق 25 سالہ تکریم بی بی کی شادی چار ستمبر کو کوئی تھی، تاہم اس کے سسرال والے اس بات پر شدید برہم تھے کہ وہ اپنے ساتھ کم جہیز کیوں لائی۔

مقامی پولیس افسر رانا ریاض کے مطابق، ’زبردستی تیزاب پلائے جانے کے بعد یہ لڑکی ہسپتال لائی گئی، تاہم اندرونی زخموں کی وجہ سے تکریم اپنی زندگی کی بازی ہار گئی۔‘

پولیس کےمطابق اس واقعے کے بعد تکریم کے شوہر کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جا رہے ہیں مگر وہ فرار ہے۔

گزشتہ ہفتے بھی اسی علاقے میں ایک 26 سالہ لڑکی کو کم جہیز لانے پر زہر دے کر ہلاک کر دیا گیا تھا۔

ڈی پی اے کے مطابق جہیز کی طلب پاکستان میں شادیوں کی ایک عمومی کہانی ہے اور اس معاملے پر لڑکیوں پر تشدد اور بعض واقعات میں قتل جیسے معاملات بھی اس قدامت پسند معاشرے کے حامل ملک میں انوکھے نہیں۔