1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

کمبھ میلہ: لاکھوں ہندو زائرین ’گناہ دھونے‘ کے لیے بےقرار

بھارت میں لاکھوں ہندو زائرین اور سادھوؤں نے آج بروز ہفتہ دریائے گوداوری کے ’پاک پانی‘ میں ڈبکی لگا کر اپنے ’گناہ دھو لیے‘۔ مہا کمبھ میلے کے پہلے ’اشنان‘ کے دن شہر ناسک میں لوگوں کا جم غفیر موجود ہے۔

default

کمبھ کا میلہ ہندو اساطیر کے حوالے سے انتہائی عقیدت و احترام کا حامل ہے

خبر رساں ادارے اے ایف پی نے بھارتی حکام کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس مرتبہ ناسک میں کسی بھی بدنظمی یا دوسرے ناخوشگوار واقعے کی روک تھام کے لیے انتہائی سخت احتیاطی تدابیر اختیار کی گئی ہیں۔ اس مقام پر بارہ سال قبل منعقدہ کمبھ میلے کے دوران ہی دریا میں نہانے کے وقت بھگدڑ کے نتیجے میں متعدد افراد مارے گئے تھے۔ منتظمین نے بتایا ہے کہ اس مرتبہ اختیار کی جانے والی حکمت عملی کے باعث اب تک کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا۔

DW.COM

بھارتی ریاست مہاراشٹر کے شہر ناسک کے ضلعی انفارمیشن آفیسر کے۔ موگھے نے اے ایف پی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا، ’’ماضی کی طرح کا کوئی واقعہ رونما نہیں ہوا۔ ابھی تک سب کچھ اچھا ہے۔‘‘ کمبھ کا میلہ ہندو اساطیر کے حوالے سے انتہائی عقیدت و احترام کا حامل ہے۔ اس دوران ہندو زائرئن اپنے عقائد کے مطابق ’مقدس پانیوں‘ میں ڈبکی لگا کر اپنے گناہ دھو لیتے ہیں۔

کمبھ کا میلہ ہر تین سال بعد چار مختلف مقدس مقامات میں باری باری منعقد کیا جاتا ہے۔ اس مرتبہ اس مذہبی میلے کا انعقاد ناسک میں کیا جا رہا ہے۔ دیگر تین ’مقدس مقامات‘ جہاں اس ہندو مذہبی میلے کا اہتمام کیا جاتا ہے، ان میں ہریدوار، الٰہ آباد اور اوجین شامل ہیں۔ کمبھ میلے میں ہر مرتبہ لاکھوں ہندو زائرین شرکت کرتے ہیں۔ اس کا شمار دنیا کے بہت بڑے اجتماعات میں ہوتا ہے۔

سن 2003ء میں جب ناسک میں اس میلے کا اہتمام کیا گیا تھا تو وہاں بھگدڑ کی وجہ سے انتالیس زائرین لقمہ اجل بن گئے تھے۔ اسی لیے اس مرتبہ منتظمین نے خصوصی انتظامات کیے ہیں تاکہ کسی طرح کا بھی کوئی مسئلہ پیدا نہ ہو۔ اس مرتبہ زائرین کی سلامتی کو یقینی بنانے کے لیے بیس ہزار سکیورٹی اہلکار بھی تعینات کیے گئے ہیں جبکہ مختلف مقامات پر طبی ٹیمیں بھی موجود ہیں۔

ہندو اساطیری حوالہ جات کے تناظر میں ناسک دیگر تین مقدس مقامات سے یوں بھی ممتاز سمجھا جاتا ہے کیونکہ وہاں ’اشنان‘ کے دو مقامات ہیں۔ اس مرتبہ ناسک میں ’مقدس اشنان‘ کا آغاز مقامی وقت کے مطابق صبح چار بجے ہوا اور سب سے پہلے سادھوؤں نے دریا میں ڈبکی لگائی۔ بعدازاں یہ دونوں مقام عام زائرین کے لیے کھول دیے گئے۔

Bildergalerie Kumbh Mela (das größte religiöse Fest Indiens)

کمبھ میلے میں غیر ملکی سیاح بھی بڑے شوق سے شرکت کرتے ہیں

ناسک میں کمبھ میلے کے منتظمین نے بتایا کہ اس مرتبہ متوقع طور پر آٹھ سے دس ملین تک افراد دو ماہ تک جاری رہنے والے اس میلے میں شرکت کریں گے۔ انتیس اگست کے علاوہ تیرہ اور اٹھارہ ستمبر کو بھی ناسک کے دو گھاٹ ’مقدس اشنان‘ کے لیے استعمال کیے جائیں گے۔