1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کشمیر: کنٹرول لائن کے آر پار شیلنگ، دو دنوں میں آٹھ ہلاکتیں

پاکستان اور بھارت کے درمیان کشمیر کے متنازعہ اور منقسم خطے میں کنٹرول لائن کے آر پار ہونے والی شدید فائرنگ اور شیلنگ ابھی تک جاری ہے اور گزشتہ دو روز کے دوران دونوں طرف مارے جانے والے افراد کی تعداد اب آٹھ ہو گئی ہے۔

Grenze zwischen Indien und Kaschmir Soldaten

کنٹرول لائن کے قریب گشت کرتے بھارتی دستے، فائل فوٹو

بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں سری نگر سے آج اتوار سولہ اگست کے روز ملنے والی مختلف نیوز ایجنسیوں کی رپورٹوں کے مطابق کنٹرول لائن کے دونوں طرف دونوں ہمسایہ ملکوں کے دستوں کے مابین بھاری ہتھیاروں سے فائرنگ اور مارٹر شیل فائر کیے جانے کا سلسلہ آج بھی جاری رہا اور اس دوران ایک خاتون کی ہلاکت کے ساتھ دو دنوں کے دوران ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد بڑھ کر چھ ہو گئی۔

نیوز ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس نے بھارتی فوج کے ترجمان لیفٹیننٹ کرنل منیش مہتا کے بیانات کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ کشمیر کے پونچھ اور بالا کوٹ سیکٹرز میں نئی دہلی اور اسلام آباد کے مسلح دستوں کے درمیان فائرنگ کا نیا تبادلہ آج اپنے ساتویں دن میں داخل ہو گیا۔

بھارتی پولیس کے ایک اہلکار دنیش رانا کے مطابق موجودہ ویک اینڈ پر پاکستانی دستوں کی طرف سے کی جانے والی فائرنگ میں اب تک مبینہ طور پر چھ بھارتی شہری ہلاک اور سترہ دیگر زخمی ہو چکے ہیں۔

دوسری طرف پاکستانی فوج کا کہنا ہے کہ اسی تازہ فوجی کشیدگی کے عرصے میں کنٹرول لائن کے قریب پاکستان کے زیر انتظام علاقے میں اب تک دو عام شہری ہلاک اور دو دیگر زخمی ہو چکے ہیں۔

ایسوسی ایٹڈ پریس نے لکھا ہے کہ ان نئی سرحدی جھڑپوں کے آغاز کا الزام دونوں ہی ملک ایک دوسرے پر لگاتے ہیں اور دونوں کے درمیان 2003ء میں جو فائر بندی معاہدہ طے پایا تھا، اس کے باوجود ان کے مابین وقفے وقفے سے فائرنگ کا تبادلے کے سلسلہ ابھی تک ختم نہیں ہوا۔

Soldat der pakistanischen Armee in Gefechtsbereitschaft im pakistanisch kontrollierten Kaschmir

کشمیر کے چکوٹھی سیکٹر میں کنٹرول لائن کے قریب ایک بنکر میں پوزیشن سنبھالے ہوئے ایک پاکستانی فوجی

جرمن نیوز ایجنسی ڈی پی اے نے لکھا ہے کہ بھارتی عسکری ذرائع کے مطابق کنٹرول لائن کے آر پار موجودہ جھڑپوں کے دوران صرف کل ہفتہ پندرہ اگست کو، جب چودہ اگست کو منائے جانے والے پاکستان کے یوم آزادی کے ایک روز بعد بھارت میں قومی یوم آزادی منایا جا رہا تھا، پانچ سویلین باشندے مارے گئے، جن میں ایک دس سالہ لڑکا بھی شامل تھا۔

آج اتوار کے روز اسی شیلنگ میں ایک اور خاتون کی ہلاکت کے بعد کنٹرول لائن کے پار بھارتی علاقے میں موجودہ ویک اینڈ پر مارے جانے والے والے افراد کی تعداد چھ ہو گئی۔ بھارتی حکام کے مطابق اس مہینے کے دوران اب تک کنٹرول لائن پر فائر بندی معاہدے کی خلاف ورزی کے 30 سے زائد واقعات رونما ہو چکے ہیں۔

اسی طرح پاکستان کی طرف سے بھی الزام لگایا جاتا ہے کہ بھارتی دستے اسی عرصے میں دو طرفہ سیزفائر کی درجنوں خلاف ورزیوں کے مرتکب ہوئے ہیں۔