1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کشمیر میں فوجی آپریشن، چھ باغی ہلاک

بھارتی زیر انتظام کشمیر میں جمعہ کو خوں ریز جھڑپوں کے دوران چھ باغیوں سمیت دو سیکیورٹی اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں۔

default

بھارتی فوج کے ایک ترجمان نے بتایا ہے کہ یہ جھڑپ سری نگر سے اسی کلو میٹر دور شمال میں واقع رفیع آباد نامی علاقے میں پیش آئی۔ کرنل وینیت سُود نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا ہے کہ انہیں اطلاع موصول ہوئی تھی کہ ضلع بارہ مولا کے اس علاقے میں انتہا پسند چھپے ہوئے تھے۔ ان کے مطابق اطلاع موصول ہونے کے بعد سیکیورٹی فورسز نے علاقے میں چھاپے مارا جبکہ مسلح انتہا پسندوں نے حملہ کر دیا۔ بھارتی کرنل نے مزید بتایا کہ اس جھڑپ کے دوران ان کے دو فوجی مارے گئےجبکہ چھ انتہا پسندوں کو ہلاک کر دیا گیا۔

جمعہ کی صبح اس واقعہ کے پیش آنے کے بعد سیکیورٹی فورسز نےسرچ آپریشن شروع کر رکھا ہے۔

Kontrollposten am indischen See Dal in Srinagar Indien-Pakistan Konflikt

اس واقعہ کے بعد علاقے کی سیکیورٹی مزید سخت کر دی گئی ہے

دریں اثناء علیحدگی پسند تنظیم حزب المجاہدین کے ترجمان نے نامعلوم مقام سے ایک مقامی خبر رساں ادارے کو فون کر کے اس واقعہ کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے بتایا کہ اس حملے میں ان کے چار جنگجو ہلاک ہو گئے ہیں۔

رواں ہفتے کے دوران انتہا پسندوں اور بھارتی سیکیورٹی فورسز کے درمیان یہ دوسری بڑی جھڑپ ہے۔ اس سے قبل منگل کو شورش زدہ وادی کے ضلع بانڈی پورہ میں انتہا پسندوں نے حملہ کر کےایک بھارتی میجر اورایک سپاہی کو ہلاک کر دیا تھا اور خود فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے تھے۔

خیال رہے کہ بھارتی زیرانتظام کشمیر میں سن 1980ء سے مختلف پر تشدد واقعات کے نتیجے میں کوئی چالیس ہزار افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ ان ہلاک شدگان میں شہری، سیکیورٹی فورسز اور فوج کے علاوہ جنگجو بھی شامل ہیں۔

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: شادی خان سیف

DW.COM